ترکی میں خواتین فوجی افسران کےاسکارف لینےپرپابندی ختم -
The news is by your side.

Advertisement

ترکی میں خواتین فوجی افسران کےاسکارف لینےپرپابندی ختم

انقرہ : ترک حکومت نےخواتین فوجی افسران پراسلامی اسکارف پہننے کی تاریخی پابندی کوختم کردیا۔یہ پابندی 1980 کی دہائی میں عائد کی گئی تھی۔

تفصیلات کےمطابق ترک وزارتِ دفاع کےاحکامات کےبعد ترک فوج میں خواتین فوجی افسران پراسلامی اسکارف پہننے کی پابندی کوختم کردیاگیا۔

مقامی میڈیا کےمطابق خاتون افسران اپنی کیپ یا بیرٹ کے نیچے اسکارف پہن سکتی ہیں تاہم اس کا رنگ یونیفارم کے رنگ جیسا ہونا چاہیے جبکہ اسکارف پہننے کی صورت میں چہرہ چھپنا نہیں چاہیے۔

خیال رہےکہ ترکی کی حکمراں جماعت کی جانب سے طویل عرصے سے خواتین کے اسکارف پر عائد پابندی ختم کیےجانےکامطالبہ کیاجاتارہا ہے۔

یاد رہےکہ ترکی میں 1980 کی دہائی میں عوامی اداروں میں خواتین کے لیے سر پراسکارف لینے پر پابندی عائد کی گئی تھی۔ تاہم اب ترکی میں صدر رجب طیب اردوگان یہ دلیل دیتے ہیں کہ یہ پابندی ماضی کی تنگ نظری کی وجہ سےتھی۔

واضح رہےکہ ترکی کا قانون سیکولر ہےیعنی سنہ 1920 سے اب تک سرکاری طور پر ریاست کا کوئی مذہب نہیں ہے۔ملک کی اکثریتی آبادی سنی مسلمانوں پر مشتمل ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں