The news is by your side.

Advertisement

ترکی کا کرونا لاک ڈاؤن دنیا کیلئے مثال بن گیا

استنبول : ترکی میں ہونے والے کرونا لاک ڈاؤن کو مثالی قرار دیا جا رہا ہے کیونکہ سب کچھ بند ہونے کے باوجود کچھ بھی بند نہیں ہوااور لوگ بھی حکومتی ہدایت پر پابندی سے عمل کررہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق کورونا وائرس کے انفیکشن کو پھیلنے سے روکنے کیلئے دنیا کے تمام ممالک میں لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا ہے۔ کہیں پر لاک ڈاون کو لے کر کافی سختی برتی جارہی ہے تو کہیں تھوڑی نرمی کا مظاہرہ کیا جارہا ہے لیکن ترکی نے لاک ڈاؤن کے سب سے الگ قوانین بنائے ہیں۔

ترکی نے کورونا وائرس سے نمٹنے کیلئے علیحدہ اور منفرد پالیسی اختیار کرتے ہوئے ہفتے کے آخری روز لاک ڈاؤن لگایا جبکہ ہفتہ بھر اسٹے ہوم کے تحت صرف بچوں اور بزرگوں کے گھر سے باہر نکلنے پر پابندی لگا رکھی ہے، ایسے میں لاک ڈاون اور خاص عمر کے لوگوں پر مخصوص پابندیوں کے ذریعہ ترکی نے کورونا وائرس کے خلاف جنگ میں نیا تجربہ کیا ہے۔

اس حوالے سے ماہرین کا کہنا ہے کہ ترکی کے لاک ڈاؤن ماڈل اور خاص عمر کے لوگوں پر پابندی بالکل صحیح اقدام ہے۔ اس اقدام سے ایسے لوگ جن کے وائرس کی زد میں آنے کا زیادہ خطرہ ہے وہ لوگ گھروں میں رہیں اور باقی لوگ ضروری تحفظ کے ساتھ اپنے اہم کام کیلئے گھر سے باہر نکل سکتے ہیں۔

ترک حکومت لوگوں سے گھروں میں رہنے اور سماجی دوری پر عمل کرنے کی اپیل کررہی ہے وہیں گھروں میں رہنے کی پالیسی کے تحت صرف 20 سال سے کم اور 60 سال سے زیادہ عمر کے لوگوں پر ہی باہر نکلنے پر پابندی ہے.

امریکی نشریاتی ادارے سی این این میں شائع ایک رپورٹ کے مطابق ترکی میں گزشتہ ویک اینڈ لاک ڈاون رہا۔ 31 صوبوں میں 48 گھنٹے کا کرفیو لگایا گیا۔

ترکی حکومت نے دو گھنٹے کی پیشگی اطلاع پر کرفیو کا اعلان کردیا تھا جس کی وجہ سے ترکی میں افراتفری مچ گئی، ضروری سامان خریدنے کیلئے دکانوں پر لوگوں کا جم غفیر آگیا، کچھ مقامات پر لوگوں نے سماجی دوری کا بھی خیال رکھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں