The news is by your side.

Advertisement

ترکی کا امریکا کو دو ٹوک جواب!

انقرہ : طیب اردوآن نے ایک مرتبہ پھر امریکا کو واضح پیغام دیتے ہوئے کہا کہ ترکی کے ایس 400 میزائل سسٹم اور ایف 35 طیاروں کے معاملے پر کوئی قدم اٹھانے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔

ان خیالات کا اظہار ترکی کے صدر رجب طیب اردوآن نے باکو میں میڈیا نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، انہوں نے کہا کہ امریکی صدر جوبائیڈن سے ترکی کے ایس 400 میزائل سسٹم اور ایف 35 طیاروں کے معاملے پر مختلف اقدام اٹھانے کا کوئی سوال پیدا نہیں ہوتا کیوں کہ ایف 35 سے متعلق ہمارے بس میں جو تھا وہ کیا ہے۔

ترک صدر کا کہنا تھا کہ دہشت گرد تنظیموں کا ساتھ دینا تاریخی غلطی تھی، افغانستان سے امریکی افواج کے انخلاء کے بعد ترکی پر ذمہ داریاں بڑھ گئی ہیں۔

خیال رہے کہ امریکا کی سابقہ دور حکومت کے وزیر دفاع نے ترکی دباؤ ڈالتے ہوئے کہا تھا کہ ترکی کو روسی ساختہ ایس 400 میزائل اور امریکا کے لڑاکا طیارے ایف 35 میں سے کسی ایک کا انتخاب کرنا ہوگا، ایس 400 اور ایف 35 ایک ساتھ جمع نہیں ہوسکتے۔

ٹرمپ انتظامیہ نے خبردار کیا تھا کہ اگر ترکی نے روسی ساختہ ایس-400 میزائل سسٹم کی خریداری کے سمجھوتے پر عملدرآمد جاری رکھا تو انقرہ پر پابندیاں عائد کردی جائیں گی۔

واضح رہے کہ ترکی نے امریکی دھمکیوں کے باوجود روس سے ایس 400 میزائل سسٹم کی خریداری کو یقینی بنایا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں