site
stats
عالمی خبریں

داعش کو شکست دیناہماری اولین ذمہ داری ہے،ترک صدر

انقرہ: ترک صدر رجب طیب اردگان نے داعش کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ اس دہشت گرد تنظیم کا جڑ سے خاتمہ ہماری ذمہ داری ہے۔

تفصیلات کےمطابق ترک صدر کا کہنا تھا کہ شام سے داعش کا خاتمہ ترک قوم کی اولین ذمہ داری ہے تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جا سکے کہ دہشت گرد تنظیم ہمارے ملک میں کارروائیاں نہیں کر سکتیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ ماہ داعش کے خلاف شام میں شروع کیا گیا فوجی آپریشن ’’دی یوفریٹس شیلڈ‘‘ دہشت گرد گروہ کو ختم کرنے کی جانب پہلا قدم ہے۔

رجب طیب اردگان نے کہا کہ ترکی رواں برس جولائی میں ہونے والی فوجی بغاوت کی کوشش کے مقابلے میں اب بہت زیادہ مضبوط،پر عزم اور متحرک ہو چکا ہے۔

ترکی کی جانب سے شام میں شروع کئے گئے آپریشن دی یوفریٹس شیلڈ کے بعد سے اب تک داعش کے حملوں میں 6 ترک فوجی جاں بحق ہو چکے ہیں لیکن ترک صدر کا کہنا تھا کہ داعش کے خلاف آپریشن جاری رہے گا اور ہمارے فوجیوں کے خون کا ایک قطرہ بھی رائیگاں نہیں جائے گا۔

ترک صدر کا کہنا تھا کہ فوج داعش کے علاوہ شام میں کردش ڈیمو کریٹک یونین پارٹی اور اس کی مسلح تنظیم پیپلز پروٹیکشن یونٹ کو بھی نشانہ بنا رہے ہیں۔

واضح رہے کہ ترکی نے گرشتہ ماہ داعش اور کردش ملیشیا سے مقابلے کے لیے سیکڑوں فوجی اور درجنوں ٹینک شام بھیجے تھے اور ترک حکومت کی جانب سے شدت پسند تنظیموں کے خلاف شروع کیے گئے آپریشن کو ’’دی یوفریٹس شیلڈ‘‘ کا نام دیا گیا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top