ترک اسپیکر کی بیرون ملک کاروباری سرگرمیاں آشکار کرنے پر خاتون صحافی کو قید کی سزا journalist
The news is by your side.

Advertisement

ترک اسپیکر کی بیرون ملک کاروباری سرگرمیاں آشکار کرنے پر خاتون صحافی کو قید کی سزا

انقرہ : عدالت نے ترکی پارلیمنٹ کے اسپیکر اور ان کے بیٹوں کی غیر قانونی جائیدادیں منظر عام پر لانے کی پاداش میں خاتون صحافی کو توہین کے الزام میں قید کی سزا سنا دی۔

تفصیلات کے مطابق ترکی کے دارالحکومت استنبول کی عدالت نے سابق وزیر اعظم اور موجودہ اسپیکر کی توہین سے متعلق کیس کی سماعت کرتے ہوئے اہم شخصیات کی توہین کے الزام میں گرفتار خاتون صحافی بیلین اونکر کو ایک برس سے زائد قید کی سنائی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ ترک حکام کی جانب سے بیلین اونکر پر الزام عائد کیا گیا تھا انہوں نے اپنے کالمز اور تحریروں میں سابق ترک وزیر اعظم بنالی یلدرم اور ان کے بیٹوں کی بیرون ملک جائیدادوں اور کاروبار کا پردہ فاش کیا تھا۔

عرب میڈیا کے مطابق ترک حکام نے خاتون صحافی پر الزام عائد کیا انہوں نے اپنی تحریروں میں بنالی یلدرم کے بیٹوں پر ٹیکس چوری کا الزام بھی عائد کیا تھا۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ خاتون صحافی بیلین اونکر صحافیوں کی عالمی تنظیم (آئی سی آئی جے) کی رکن بھی ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق بنالی یلدرم 12 جولائی 2018 کو ترک پارلیمنٹ کے اسپیکر منتخب ہوئے تھے جبکہ 2018 تک ترکی کے وزیر اعظم کی حیثیت سے فرائض انجام دے رہے تھے۔

دوسری جانب خاتون صحافی نے عدالتی فیصلے پر رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ میرے اوپر عائد تمام الزامات بے بنیاد ہیں، میں نے کسی کی توہین نہیں کی بلکہ حقیقت کو آشکار کیا ہے۔

مزید پڑھیں : ترکی: ناکام فوجی بغاوت میں ملوث ہونے پر 6 صحافیوں کو دس سال قید کی سزا

بیلین اونکر کا کہنا تھا کہ مقدمے کی نوعیت دیکھ کر عدالتی فیصلے کا اندازہ ہوگیا تھا لیکن میں اپیل کورٹ میں مذکورہ فیصلے کے خلاف درخواست دائر کروں گی۔

خیال رہے کہ صحافیوں کی عالمی تنظیم (آئی سی آئی جے) کی جانب سے ترکی کو صحافیوں و صحافت کےلیے بدترین ملک قرار دیا گیا تھا کیوں گزشتہ سال ترکی حکومت نے 68 صحافیوں کو ناکام ترک فوجی بغاوت میں ملوث ہونے، غداری اور ریاست کے خلاف جرائم پیشہ عناصر کی معاونت کرنے کا الزام لگاکر جیلوں میں قید کردیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں