The news is by your side.

Advertisement

ٹویٹر نے الیکشن مہم کی پالیسی کا اعلان کردیا

واشنگٹن: مائیکرو بلاگنگ اور سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر نے انتخابات پر اثر انداز  نہ ہونے کے حوالے سے نئی پالیسی کا اعلان کردیا جس کے تحت ہر الیکشن مہم پر خاص نظر رکھی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق ٹویٹر نے اپنے پلیٹ فارم پر بڑھتے ہوئے سیاسی اثر رسوخ اور انتخابی مہم کو کنٹرول میں رکھنے کے لیے سیاسی جماعتوں کے لیے مخصوص دائرہ کار کی پالیسی کا اعلان کیا۔

ٹویٹر کے مطابق انتخابات میں انتخابی مہم کی مؤثر نگرانی اور کسی بھی قسم کی منفی سرگرمیوں کو روکنے کے لیے ’سیاسی مہمات پالیسی‘ وضع کردی گئی جس پر تمام ہی ممالک کی سیاسی جماعتوں کو عمل کرنا ضروری ہوگا۔

مائیکربلاگنگ ویب سائٹ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ انتخابی مہم چلانے والی سیاسی جماعتوں کے اشہارات بنائے جائیں گے جو شناخت اور مقصد کی جانچ پڑتال کریں گے نیز یہ اگر کسی فریق نے قواعد و ضوابط کی خلاف ورزی کی تو اُس کی مہم کمپنی کی  طرف سے متاثر بھی کی جاسکے گی۔

ٹویٹر کا مزید کہنا ہے کہ اس نئی پالیسی کا مقصد کسی بھی ملک میں ہونے والے انتخابات میں دیگر ممالک کی جانب سے اثر انداز ہونے کے امکانات کو بالکل ختم کرنا ہے کیونکہ اس سے قبل امریکا کے صدارتی الیکشن میں روس پر مبینہ مداخلت کا الزام عائد کیا گیا تھا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ سے یہ بھی واضح کیا گیا ہے کہ جس ملک میں انتخابات ہوں گے وہی کے مقامی افراد آسانی کے ساتھ اپنی سیاسی مہم چلانے کے مجاز ہوں گے بصورت دیگر دوسرے ملک میں بیٹھے کسی امیدوار نے اگر حمایت میں ٹویٹ کیا تو اُس کا نوٹس لیا جائے گا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں