The news is by your side.

Advertisement

سی پیک کی حفاظت، چین میں تیار کیے گئے 2بحری جہاز سمندر میں اتار دیے گئے

اورماڑہ : اقتصادی راہداری منصوبے کے سمندری راستے کی حفاظت کیلئے چین کی جانب سے فراہم کیے گئے دو بحری جہاز سمندر میں اتار دیے گئے۔ وزیردفاع خواجہ آصف نے کہا کہ ان جہازوں سے سمندری تجارت کو مزید محفوظ بنایا جاسکے گا۔

تفصیلات کے مطابق اقتصادی راہداری منصوبے کی حفاظت کیلئے چین میں تیار کیے گئے دو بحری جہاز پی ایم ایس ایس ہنگول اور پی ایم ایس ایس باسول سمندر میں اتار دیے گئے۔

جناح نیول بیس پر پی ایم ایس ایس ہنگول اور پی ایم ایس ایس باسول کی میری ٹائم سیکیورٹی ایجنسی میں شمولیت کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر دفاع خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ ان جہازوں سے سمندری تجارت کو مزید محفوظ بنایا جاسکے گا، ہمارے میری ٹائم کے شعبے نے پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے کے حوالے سے اہم کامیابی حاصل کی ہے۔

وزیر دفاع خواجہ محمد آصف نے اورماڑہ جناح نیول بیس میں پاک بحریہ کے آپریشنل امور اور ساحلی علاقوں کے عوام کی معاشی و سماجی حالت بہتر بنانے کے لیے پاک بحریہ کی جانب سے کئے جانے والے اقدامات کا جائزہ لیا۔


مزید پڑھیں : سی پیک کی حفاظت: دو چینی بحری جہاز پاکستان کے حوالے


وزیر دفاع خواجہ محمد آصف نے پاکستان نیوی کی آپریشنل تیاریوں اور خطے میں سیکیورٹی کو یقینی بنانے میں پاک بحریہ کے کردار پر اطمینان کا اظہار کیا۔

خواجہ آصف نے کہا کہ انھیں یہ جان کر بہت خوشی ہوئی ہے کہ بحری جہازوں کو ان کی مقرر کردہ فراہمی کی تاریخ سے قبل فراہم کردیا گیا ہے اور معیار کے حوالے سے کسی بھی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومت کی جانب سے راہداری کے سمندری راستے کے تحفظ کیلئے پاکستان نیوی اور پاکستان میری ٹائم سیکیورٹی ایجنسی کو تمام آپریشنل ذرائع فراہم کیے جائیں گے کیونکہ یہ نا صرف پاکستان اور چین کیلئے اہم سماجی و اقتصادی منصوبہ ہے بلکہ یہ خطے کے دیگر ممالک کیلئے بھی اہم ہے’۔

انہوں نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری اور گوادر بندرگاہ منصوبے کی کامیابی کا انحصار بحرہند خصوصا بحیرہ عرب میں محفوظ میری ٹائم ماحول پر منحصرہے جس کو یقینی بنانے کے لیے پاک بحریہ مکمل تیار ہے۔

وزیر دفاع نے کیڈٹ کالج اورماڑہ اوربحریہ ماڈل کالج کا دورہ کیا، جہاں انہوں نے طلباء کی متعدد سرگرمیوں کو دیکھا اورکیڈٹس اور طلباء کے ساتھ بات چیت کی۔

وزیر دفاع نے پاک بحریہ کے ہسپتال پی این ایس درمان جاہ کا دورہ بھی کیا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں