The news is by your side.

Advertisement

مقبوضہ غزہ میں اسرائیلی فورسز کی بے دریغ‌ فائرنگ، 2 فلسطینی نوجوان شہید

غزہ : اسرائیلی فورسز نے صیہونی ریاست کے ظلم و بربریت کے خلاف احتجاج کرنے والوں پر فائرنگ کرکے دو فلسطینی نوجوانوں کو شہید جبکہ درجنوں کو زخمی کردیا۔

تفصیلات کے مطابق اسرائیلی فوج نے فلسطین کے مقبوضہ شہر غزہ کی سرحد پر تحریک حق واپسی کے تحت ہفتہ وار احتجاج کرنے والے مظاہرین کے خلاف طاقت کا بے دریغ استعمال کرتے ہوئے ظلم و بربریت کی نئی تاریخ رقم کردی۔

مقامی میڈیا کا کہنا ہے کہ ناجائز صیہونی ریاست کے ظالم فوجیوں نے پُر امن مظاہرے کو سبوتاژ کرنے کےلیے نہتے فلسطنیوں پر اندھا دھند فائرنگ کردی، جس کے نتیجے میں دو فلسطینین جوان شہید جبکہ 55 سے زائد زخمی ہوگئے۔

مقامی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ اسرائیلی اسنایپر نے مظاہرے میں شامل نوجوان کی آنکھوں کو نشانہ بنایا جس کے باعث وہ موقع پر ہی شہید ہوگیا جبکہ 18 سالہ خالد نامی نوجوان نے اسپتال میں دوران علاج جام شہادت نوش کیا۔

فلسطینی وزارت صحت کا کہنا تھا کہ 55 سے زائد زخمیوں کو اسپتال لایا گیا تھا جس میں دو نوجوانوں کی حالت تشویش ناک ہے جبکہ ایک نوجوان کی زخمی ٹانگ کو جسم سے کاٹ کر علیحدہ کرنا پڑا۔

مزید پڑھیں : اسرائیلی فورسز کی نہتے فلسطینیوں پر فائرنگ، دو نوجوان شہید

غاضب صیہونی ریاست کے خلاف ہر جمعے فلسطینی غزہ بارڈر پر احتجاجی مظاہرہ کرتے ہیں، یہ سلسلہ گذشتہ سال 30 مارچ سے چلا آرہا ہے۔

ایک محتاط اندازے کے مطابق ہفتہ وار احتجاجی مظاہروں کے دوران اب تک اسرائیلی فوج 300 سے زائد فلسطینیوں کو شہید کرچکی ہے، جبکہ ہزاروں زخمی بھی ہوئے۔

خیال رہے کہ گذشتہ سال نو فروری کو صیہونی فوج کی فائرنگ سے 14 سالہ حسن ایاد شلبی سینے میں گولی لگنے کے باعث موقع پر ہی شہید ہوگیا تھا جبکہ 17 سالا حمزہ محمد اشتوی کو شدید زخمی حالت میں اسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے شہید تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں