The news is by your side.

Advertisement

امریکا نے شام سے اپنی افواج واپس بلانے پر غور شروع کردیا

واشگنٹن: امریکا نے شام سے اپنی افواج واپس بلانے پر حتمی غورکرنا شروع کردیا، امریکی حکام کا کہنا ہے کہ بہت جلد شام سے اپنی افواج واپس بلالی جائیں گی۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق طویل عرصے سے امریکی افواج شام میں موجود ہیں، امریکی حکام کے مطابق افواج نے وہاں اپنے اہداف حاصل کرلیے ہیں اس لیے افواج کو واپس بلانے کا فیصلہ کیا جارہا ہے۔

امریکی حکام کا کہنا تھا کہ شام سے افواج واپس بلانے کے حوالے سے تفصیلات نہیں بتاسکتے اور ابھی اس حوالے سے کوئی ٹائم فریم نہیں دیا جاسکتا ہے۔

امریکی حکام کا کہنا تھا کہ شام سے افواج کو واپس بلانے سے قبل اتحادیوں سے مشورہ کیا جائے گا۔

دوسری جانب پینٹاگون کے ترجمان کا کہنا ہے کہ اس طرح کی خبروں میں کوئی صداقت نہیں ہے اپنے اتحادیوں کے ساتھ شام میں کام کرتے رہیں گے۔

مزید پڑھیں: صدر ٹرمپ نے شام سے امریکی فوج واپس بلانے کا اعلان کردیا

ری پبلکن سینیٹر لِنڈسے گراہم نے شام سے امریکی افواج کو واپس بلانے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس طرح کے اقدامات سے امریکا اور دنیا کے دوسرے ممالک میں خطرناک نتائج برآمد ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ شام سے افواج کو واپس بلانے سے ایران، داعش اور بشارالاسد کی کامیابی تصور کیا جائے گا، اس طرح کے اقدامات سے گریز کیا جائے۔

واضح رہے کہ رواں سال مارچ میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے شام سے اپنی افواج واپس بلانے کا اعلان کیا تھا، ان کا کہنا تھا کہ فوج نے شام میں داعش کو شکست دے کر اپنے اہداف حاصل کرلیے ہیں۔

ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ شام میں امریکی افواج کا کام داعش کو شکست دینا تھا فوج نے یہ کام بخوبی سر انجام دیا ہے، فوجی جوان جلد اپنی سرزمین پر واپس پہنچ جائیں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں