داعش کی معاونت کرنے پر امریکی فوجی کو عمر قید کی سزا SUPPORT TO ISIS
The news is by your side.

Advertisement

داعش کی معاونت کرنے پر امریکی فوجی کو عمر قید کی سزا

واشنگٹں : امریکی عدالت نے انتہا پسند تنظیم داعش کی مدد کرنے کے جرم امریکی فوجی کو 25 برس قید کی سزا سنادی۔

تفصیلات کے مطابق امریکی ریاست ہوائی کی مقامی عدالت میں منگل کے روز امریکی فوجی ایرک کانگ کے عالمی شدت پسند تنظیم داعش کے لیے نرم گوشہ رکھنے، معاونت کرنےکے کیس کی سماعت ہوئی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ عدالت نے امریکی فوجی کو داعش کی مدد کرنے کے جرم میں عمر قید کی سزا سناتے ہوئے جیل منتقل کرنے کا حکم دے دیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ عدالت میں ملزم کے خلاف پیش کیے گئے شواہد سے معلوم ہوتا ہے کہ فوجی اہلکار سنہ 2016 سے داعش کےلیے متحرک تھا اور باقاعدگی سے داعش کی فلمائی گئی ویڈیوز دیکھتاتھا۔

عدالتی دستاویزات کے مطابق ایرک کانگ نے گذشتہ برس امریکی خفیہ ایجنسی ایف بی آئی کے خفیہ اہلکار سے داعش کے سہولت کار ہونے کا اعتراف کرتے ہوئے داعش کو افرادی قوت سمیت اسلحہ فراہم کرنے کا دعویٰ کیا تھا۔

امریکی فوجی اہلکار نے بتایا تھا کہ وہ داعشی دہشت گردوں کو متعدد اہم معلومات فراہم کرچکا ہے۔

عدالت میں پیش کیے گئے ثبوتوں سے واضح ہوتا ہے کہ 35 سالہ امریکی فوجی عوامی مقامات سمیت فوجی پریڈ پر حملے کی تیاری کررہا تھا جبکہ مسلسل داعش کی معاونت کےلیے منصوبہ کرتا رہتا تھا۔

دوسری جانب سے ملزم نے عدالت کے سامنے خود پر عائد الزامات کا عتراف کیا جس کی بناء پر امریکی ریاست کی مقامی عدالت نے ملزم کو عمر قید کی سزاسنا دی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ امریکی پولیس نے داعش کے سہولت کار کو تقریب کے دوران شدت پسند تنظیم میں شمولیت کا اعلان کرنے کے بعد گرفتار کیا گیا تھا۔

امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ فوجی اہلکار ایرک کانگ کے والد ذہنی مریض ہیں اور ایرک کے اہل خانہ کے درمیان ذاتی تنازعات کے باعث جھگڑا ہوتا رہتا ہے جبکہ امریکی فوجی خود بھی پُرتشدد مزاج کا حامل ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں