The news is by your side.

Advertisement

ترکی کے خلاف معاشی پابندیاں لگانی پڑیں تو لگائیں گے: امریکی صدر

واشنگٹن: شام میں جاری فوجی آپریشن کے ردعمل میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ترکی کو خبردار کیا ہے کہ اگر انقرہ حکومت کے خلاف معاشی پابندیاں لگانی پڑیں تو لگائیں گے۔

اپنے ایک بیان میں صدر ٹرمپ نے اس بات کا بھی اقرار کیا کہ امریکا کے ترکی کے ساتھ بہت اچھے تعلقات ہیں، لیکن نہیں چاہتے تھے ترک فوج کے ہاتھوں بہت سے لوگ مارے جائیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی صدر کا کہنا تھا کہ ترکی نیٹو اتحادی ہے، ہم ترکی سے بہت سی تجارت کرتے ہیں، لیکن حالات کے تناظر میں پابندیاں لگانی پڑیں تو پیچھے نہیں ہٹیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ترکی اور کردوں میں کئی سالوں سے لڑائی چل رہی ہے، نہیں چاہتے کہ ترک فوج کے ہاتھوں بہت سے لوگ مارےجائیں۔

سعودی عرب میں اضافی امریکی فوجی تعیناتی پر تبصرہ کرتے ہوئے ٹرمپ نے بتایا کہ سعودی عرب کی مدد کے لیے مزید امریکی فوجی بھیج رہے ہیں۔

سعودی عرب کی حفاظت کے لیے امریکا کا مزید فوجی دستے بھیجنے کا اعلان

ان کا کہنا تھا کہ سعودی عرب امریکا سے اربوں ڈالر کی عسکری ودیگر مصنوعات خریدتا ہے، ریاض حکومت کا مشرقی وسطیٰ میں بہت اہم کردار ہے، جو کچھ ہم کررہے ہیں سعودی عرب اس کے عوض قیمت ادا کرنے پر آمادہ ہے۔

خیال رہے کہ سعودی عرب کی حفاظت کو مزید مضبوط بنانے کے لیے اضافی 3 ہزار فوجی اہلکار تعینات کیے جائیں گے، تاکہ کسی بھی ممکنہ خطرات سے نمٹا جاسکے۔

امریکی جانب سے یہ اقدام سعودی آئل فیکٹروں پر حملے کے بعد سامنے آیا۔ سعودی عرب کو حوثی باغیوں کی طرف سے میزائل حملوں کا بھی سامنا رہتا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں