The news is by your side.

Advertisement

حوثی باغیوں کے حملے سے سعودی تیل کی برآمد معطل

ریاض: یمن میں برسرپیکار حوثی باغیوں کی جانب سے کیے گئے حملے کی باعث سعودی تیل کی برآمد عارضی طور پر معطل ہوگئی۔

تفصیلات کے مطابق گذشتہ روز حوثی باغیوں کی جانب سے یمن کی بندرگاہ الحدیدہ کے بحیرہ احمر میں موجود سعودی عرب کے آئل ٹینکر پر حملہ کیا گیا تھا جس کے باعث تیل کی دیگر ملکوں میں فراہمی معطل ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق سعودی وزیر برائے توانائی خالد الفالح کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ یمن کے حوثی باغیوں نے انتہائی بڑے حجم کے حامل سعودی آئل ٹینکر کو بحیرہ احمر میں نشانہ بنانے کی کوشش کی تھی۔

بیان میں مزید کہا گیا تھا کہ اس حملے میں ٹینکر کو معمولی سا نقصان پہنچا، تاہم اس حملے کو بروقت کارروائی کرتے ہوئے ناکام بنا دیا گیا تھا۔


حوثی باغیوں کا سعودی آئل ٹینکر پر حملہ ناکام


دوسری جانب ریاض حکومت نے حوثی باغیوں کے حملوں کے بعد عارضی طور پر سعودی تیل کی برآمد روک دی ہے، صورت حال بہتر ہونے پر تیل کی برآمد بحال کر دی جائے گی۔

خیال رہے کہ گذشتہ روز ایران نواز حوثی باغیوں نے سعودی عرب کے آئل ٹینکر کو نشانہ بنانے کی کوشش کی تھی، جسے عرب اتحادی افواج نے کامیاب کارروائی کرتے ہوئے ناکام بنا دیا تھا، جبکہ حملے میں آئل ٹینکر کو جزوی نقصان پہنچا تھا۔

واضح رہے کہ عرب میڈیا کا کہنا تھا کہ سعودی اتحاد نے اس بات کی وضاحت نہیں کی کہ آیا حوثی باغیوں کا حملہ کس طرح ناکام بنایا، تاہم کامیاب کارروائی کا دعویٰ کیا گیا تھا۔

علاوہ ازیں متحدہ عرب امارات نے مذکورہ حملے کی تردید کرتے ہوئے موقف اختیار کیا ہے کہ یہ کوئی حوثی باٖغیوں کا حملہ نہیں بلکہ موحولیاتی اثرات کے باعث ٹینکر کو نقصان پہنچا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں