ریشم خان پرحملہ مسلمان ہونے کی وجہ سے ہوا، میٹروپولیٹن پولیس -
The news is by your side.

Advertisement

ریشم خان پرحملہ مسلمان ہونے کی وجہ سے ہوا، میٹروپولیٹن پولیس

لندن : ریشم خان پر تیزاب پھینکنے کے واقعے پر میٹروپولیٹن پولیس کا کہنا ہے کہ حملہ نفرت پر مبنی جرم ہے، ریشم خان پرحملہ مسلمان ہونے کی وجہ سے ہوا، کیس میں پیشرفت ہوئی ہے۔

لندن میں ماڈل ریشم خان پر تیزاب پھینکنے کے واقعے کی تحقیقات جاری ہے ، پولیس حکام کا کہنا ہے واقعہ تعصب اورنفرت پرمبنی جرم ہے، ملزم جان ٹام لن سے متعلق معلومات حاصل ہوئیں، ٹام لن خود کوقانون کے حوالے کردے۔

پولیس نے جان ٹام لن کی گرفتاری میں عوام سے مدد کی اپیل کی ہے۔

 

برطانوی میڈیا کو انٹرویو میں تیزاب گردی کا نشانہ بننے والے جمیل مختار کا کہنا تھا کہ تیزاب گردی اسلام فوبیا کا نتیجہ ہے، ان پرحملہ مسلمان ہونے کی وجہ سے کیا گیا، میڈیا نے واقعہ کی جانبدارانہ کوریج کی۔

جمیل مختارنے دعوی کیا کہ سفید فام لوگ ایشیائی افراد کونشانہ بنا رہے ہیں۔


مزید پڑھیں : لندن: مسلم خاتون پر تیزاب سے حملہ


یاد رہے کہ ریشم خان اوران کے کزن جمیل مختار پر اکیس جون کو مشرقی لندن کے علاقے بیکٹن میں تیزاب پھینک دیا گیا تھا، جس کے نتیجے میں  دونوں بری طرح جھلس گئے۔

اسپتال انتظامیہ کے مطابق ریشم خان کی بائیں آنکھ، چہرہ اور جسم کا کچھ حصہ تیزاب سے متاثر ہوا ہے جب کہ مختار کے سر، چہرے اور جسم کو شدید نقصان پہنچا ہے اور ان دونوں کی سرجری کی جائے گی۔


اگرآپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اوراگرآپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں