The news is by your side.

Advertisement

لندن میں چاقو زنی کے واقعات میں دو بیٹے گنوانے والی ماں کی اپیل

لندن: شمالی لندن میں دو مسلمان نوجوانوں کو چاقوؤں کے وار کرکے قتل کردیا گیا۔ مقتولین میں سے ایک کی ماں نے اپیل کی ہے کہ نوجوان چاقو زنی چھوڑدیں‘ وہ اس کے سبب اپنے دو بیٹے گنوا چکی ہیں۔

تفصیلات کےمطابق دو روز قبل شمالی لندن میں رات دس بجے دو مسلم نوجوانوں کو چاقو کے وار کرکے قتل کردیا گیا‘ مقتولین کی شناخت 20 سالہ صادق عدن محمد اور 17 سالہ عابدی کریم حسن کے نام سے ہوئی ہے۔ صادق کو کے علاقے کیمڈن کی مالڈن روڈ پر نشانہ بنایا گیا جبکہ عابدی کو بارتھلومیو روڈ پر قتل کیا گیا۔

صادق محمد کی والدہ فوزیہ عابدی نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے انتہائی غمگین حالت میں قاتلوں سے اپیل کی ہے کہ وہ یہ سب بند کریں‘ انہوں نے پانچ ماہ میں اپنا دوسرا بیٹا چاقو زنی میں ملوث افراد کے ہاتھوں کھویا ہے‘ انہوں نے کہا ’’ میں منت کرتی ہوں‘ وہ لوگ‘ بچے جن کے پاس چاقو ہیں- وہ یہ سب بند کردیں‘‘۔‘

UK stabbing

خیال رہے کہ ان کا ایک بیٹا گزشتہ سال ستمبر میں اسی طرح چاقو زنی میں ملوث افراد کے ہاتھوں قتل ہواتھا جبکہ ان کا بھائی بھی مارا جاچکا ہے۔ فوزیہ عابدی کا کہنا ہے کہ ان کی کسی سے دشمنی نہیں بس ان کے بچے غلط وقت پر غلط مقام پر پہنچ گئے جہاں موت گھات لگائے ان کی منتظر تھی اور اب وہ اپنے دوسرے بچوں کے لیے خوفزدہ ہیں۔

انہوں نے یہ بھی بتایا کہ پولیس کے اطلاع دینے سے قبل انہیں سانحے کی اطلاع مل گئی تھی‘ وہ مقامِ حادثہ پر پہنچی تو ان کے بیٹے کو طبی امداد دی جارہی تھی۔ انہیں آگے نہیں جانے دیا گیا‘ تصدیق کے لیے انہوں نے محمد کے فون پر کال کی تو اس کی رنگ ٹون کی آواز پولیس لائن کے اس طرف سے آئی۔ ابتدائی طبی امداد کے باوجود وہ جانبر نہ ہوسکا۔

محکمہ پولیس کا کہنا ہے کہ قاتلوں کی تلاش جاری ہے ‘ فی الحال کوئی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی‘ مذکورہ علاقے میں پولیس کا گشت خصوصی اختیارات کے ساتھ بڑھادیا گیا ہے۔ امید ہے جلد حوصلہ افزا نتائج برآمد ہوں گے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات  کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں