The news is by your side.

Advertisement

برطانیہ میں بچے خفیہ کارروائیوں کے لیے بطور ایجنٹ استعمال ہونے لگے

لندن: برطانیہ میں پولیس کی جانب سے خفیہ کارروائیوں کے لیے بچوں کو بطور ایجنٹ استعمال کیے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔

تفصیلات کے مطابق برطانوی پولیس چائلڈ مافیا اور دہشت گرد تنظیموں کے خلاف خفیہ کارروائیوں کے لیے بچوں کو بطور ایجنٹ استعمال کرتی رہی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی ایک رپورٹ کے مطابق پولیس بعض خفیہ کارروائیوں کے لیے 16 سال یا اس سے کم عمر کے بچوں کو استعمال کرتی رہی ہے، جبکہ بچوں سے ایک ماہ سے چار ماہ تک خفیہ کارروائیوں کے لیے معاونت لی گئی۔

رپورٹ میں یہ نہیں بتایا گیا کہ آیا برطانوی پولیس اور انٹیلی جنس ادارے جاسوسی کے لیے کتنی بار اور کہاں کہاں دہشت گردوں کے خلاف بچوں کو استعمال کرتے رہے ہیں۔

دوسری جانب برطانوی وزارت داخلہ کی جانب سے بچوں کو خفیہ کارروائیوں میں استعمال کرنے کے اقدامات کا دفاع کیا گیا ہے، ایک بیان کے مطابق اس عمل سے برطانوی پولیس کو خاطر خواہ فوائد ملے ہیں۔


برمنگھم میں وین کی ٹکر سے 19 ماہ کا بچہ ہلاک


وزارت داخلہ کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا تھا کہ بچوں کے ذریعے مختلف مافیاؤں سے متعلق ’بے مثل‘ معلومات جمع کی گئی ہیں۔

بیان میں مزید کہا گیا تھا کہ بچوں کو اس قسم کی کارروائیوں میں استعمال کیا گیا ہے لیکن ایسے واقعات زیادہ نہیں ہیں، جبکہ اس سے ہمیں کافی کامیابی ملی ہے۔

خیال رہے کہ بعض طبقوں کی جانب سے اس اقدام پر شدید تشویش کا اظہار کیا گیا ہے اور برطانوی پولیس پر تنقید بھی کی گئ ہے، ان کے مطابق اس اقدام سے بچوں کے ذہن پر منفی اثرات مرتب ہوں گے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں