The news is by your side.

Advertisement

ایران جوہری معاہدے سے دستبردار ہونے کا کوئی ارادہ نہیں، برطانوی وزیر خارجہ

لندن: برطانوی وزیر خارجہ بورس جانسن نے کہا ہے کہ امریکا کی جانب سے علیحدگی کے فیصلے کے باوجود برطانیہ ایرانی جوہری معاہدے سے دستبردار ہونے کا کوئی ارادہ نہیں رکھتا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق برطانوی وزیر خارجہ نے کہا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی طرف سے کیا جانے والا اعلان برطانیہ کے جائزے کو متاثر نہیں کرے گا۔

بورس جانسن نے کہا کہ جب تک بین الاقوامی معائنہ کار یہ کہیں گے کہ ایران معاہدے پر کاربند ہے اس وقت تک برطانیہ اس معاہدے کی مکمل پاسداری کرے گا۔

واضح رہے کہ ایران جوہری معاہدے پر برطانیہ، فرانس، جرمنی نے ٹرمپ کو قائل کرنے کی ہر ممکن کوشش کی تاہم یہ کاوشیں بروئے کار نہ آسکیں۔

برطانوی وزیر خارجہ نے امریکا پر زور دیا کہ وہ کوئی ایسا قدم نہ اُٹھائے جس سے دیگر فریقوں کے لیے ایران کے ساتھ معاہدے پر عمل جاری رکھنے میں رکاوٹ پیدا ہو۔

مزید پڑھیں: امریکی صدر ٹرمپ کا ایران سے جوہری معاہدہ ختم کرنے کا اعلان

خیال رہے کہ سابق امریکی صدر بارک اوباما نے ایران سے جوہری معاہدے سے نکلنے کے ٹرمپ کے فیصلے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایران سے جوہری معاہدہ ختم کرنا گمراہ کن اور سنگین غلطی ہے۔

یاد رہے کہ فرانسیسی صدر ایمانوئیل میکرون، برطانوی وزیراعظم تھریسامے اور جرمن چانسلر کی طرف سے مشترکہ بیان جاری کیا گیا ہے جس میں ان کا کہنا تھا کہ ہمیں صدر ٹرمپ کے اس فیصلے پر بہت پچھتاوا ہے۔ اس سے دنیا کو ایٹمی ہتھیاروں سے پاک کرنے کی تمام کوششوں پر پانی پھر جائے گا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں