The news is by your side.

Advertisement

کیا یوکرین اپنی ہی ایٹمی تنصیبات پر حملہ کر دے گا؟

کیا یوکرین میں ایٹمی تنصیبات پر کوئی ‘کھیل’ کھیلا جا رہا ہے؟ روس کی جانب سے ایک بڑا دعویٰ سامنے آیا ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ یوکرین خود ہی اپنی ایٹمی تنصیبات پر حملے کی سازش رچا رہا ہے۔

روسی میڈیا کے مطابق روس کی وزارت دفاع نے دعویٰ کیا ہے کہ یوکرینی انٹیلیجینس نے اپنے ہی ملک کی ایٹمی تنصیبات پر خود ساختہ حملوں کی منصوبہ بندی کر لی ہے، اور یوکرین اپنی ہی ایٹمی تنصیبات پر حملہ کرنا چاہتا ہے۔

روسی وزارت دفاع نے خبردار کیا ہے کہ یوکرین کی انٹیلی جینس سروس مسلح گروہوں کے ذریعے خارکیف شہر کے اطراف میں واقع ایٹمی تنصیبات پر حملوں کی سازش تیار کر رہی ہے۔

روسی وزارت دفاع نے یہ بھی بتایا ہے کہ ہماری مسلح افواج نے وینیتسا کے قریب واقع یوکرینی فوج کے ایک ایئر بیس کو انتہائی اسمارٹ ہتھیاروں کے ذریعے ناکارہ بنا دیا ہے۔

یوکرینی صدر کی قیام گاہ کے بارے میں انکشاف

واضح رہے کہ روس یوکرین جنگ 13 ویں روز بھی جاری ہے، اطلاعات ہیں کہ خارکیف اور یوکرینی دارالحکومت کیف کے آس پاس شدید لڑائی ہو رہی ہے۔

نیٹو اور مغربی ملکوں نے اب تک یوکرین کو رکینت دینے کے اپنے وعدوں پر عمل نہیں کیا، مغربی ممالک روس یوکرین جنگ میں براہ راست شریک نہیں ہو رہے، اور یوکرین کو اسلحے کی ترسیل نیز روس کے خلاف پابندیوں کے اعلان پر ہی اکتفا کیے ہوئے ہیں، دوسری طرف ولادیمیر پیوٹن کا اصرار ہے کہ روسی فوجی یوکرین میں نیو نازی ازم کا خاتمہ کر کے دم لیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں