The news is by your side.

کیا روس یوکرین جنگ کا پانسہ پلٹ گیا ہے؟

کیف: یوکرین نے روس سے اپنا اہم علاقہ واپس لینے کا دعوی کر دیا،یوکرینی صدر زیلنسکی کا کہنا ہے کہ چھینے گئے تمام علاقے روس سے آزاد کرائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق یوکرین کی فوج نے روس کے قبضے سے تین ہزار مربع کلومیٹر سے زیادہ کا علاقہ واپس لینے کا دعوی کر دیا۔

یوکرین کے آرمی چیف کا کہنا ہے کہ خارکیو ریجن کے بعد شمال اور مشرق کی طرف پیش قدمی جاری ہے، یوکرینی فورسز روسی سرحد سے پچاس کلو میٹر کی دوری پر ہیں اور ہزاروں روسی فوجی بارود اور گولہ باری چھوڑ کر فرار ہو گئے ہیں۔

یوکرینی صدر زیلنسکی نے شہر ایزوم کو آزاد کرانے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ چھینے گئے تمام علاقے روس سے آزاد کرائیں گے۔

دفاعی ماہرین کا کہنا ہے کہ روسی فورسز کی اچانک پسپائی حیران کُن ہے، روسی فوج کی یہ تیکنیک یوکرینی افواج کے لیے ٹریپ بھی ہو سکتی ہے۔

یاد رہے گذشتہ ہفتے یوکرین کے صدر زیلنسکی نے کہا تھا کہ ان کی فوج نے روس کی جانب سے داغے گئے چھ میزائلوں کو گرادیا، یہ روس کا بہت بڑا نقصان ہے۔

خیال رہے روسی فوج کی یہ پسپائی یوکرینی افواج کے لیے میدان جنگ میں اب تک کی سب سے بڑی کامیابیوں میں سے ایک ہے ، جیسا کہ انہوں نے تقریباً سات ماہ سے جاری جنگ کے آغاز میں دارالحکومت کیئف پر قبضہ کرنے کی روسی کوشش کو ناکام بنا دیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں