The news is by your side.

Advertisement

یوکرین تنازع: روس نے چین سے کیا کہا؟

روسی وزیر خارجہ سرگئی لاروف نے کہا ہے کہ امریکااور نیٹو نے اپنا وعدہ توڑا اور اقوام متحدہ کی قراردادکی خلاف ورزی کی۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹس کے مطابق یوکرین صورتحال پر چین اور روسی وزرائےخارجہ کی فون پر گفتگو ہوئی جس میں روسی وزیرخارجہ نے کہا کہ روس کو اپنےحقوق کیلئےضروری اقدامات پر مجبور کیا گیا امریکااور نیٹو نے اپنا وعدہ توڑا اور اقوام متحدہ کی قراردادکی خلاف ورزی کی۔

چینی وزیرخارجہ نے کہا کہ ہمیشہ تمام ممالک کی خودمختاری اور علاقائی سالمیت کا احترام کیا چین روس کے جائز سیکیورٹی خدشات کو سمجھتا ہے تاہم سردجنگ کی ذہنیت کو مکمل طور پر ترک کر دینا چاہیے۔

روسی وزیر خارجہ نے ایک بیان میں یوکرین پر حملے کی وضاحت کرتے ہوئے کہا ہے کہ حملے سے قبل سیکیورٹی کو یقینی بنانے کے لیے ہر آپشن پیش کیا تھا، یوکرین کے صدر جھوٹ بول رہے ہیں۔

انھوں ںے کہا مغرب نے مسلسل کیف حکومت کے جرائم کا دفاع کیا ہے، مغرب کی مسلسل بے جا حمایت نے ہی یوکرین کو المیے میں ڈالا ہے۔

قبل ازیں صدر شی جن پنگ نے روسی ہم منصب ولادیمیر پیوٹن سے رابطہ کیا ہے جس میں شی جن پنگ نے ولادیمیر پیوٹن سے یوکرین کی موجود صورتِ حال پر بات کی۔ چینی صدر نے روسی ہم منصب سے کہا کہ روس کو چاہیے کہ یوکرین سے معاملات مذاکرات سے حل کرے۔

ادھر شام کے صدر بشار الاسد نے روسی ہم منصب ولادیمیر پیوٹن کو ٹیلی فون کیا۔ دونوں رہنماؤں میں یوکرین کی حالیہ صورتِ حال پر گفتگو ہوئی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں