The news is by your side.

Advertisement

طیارہ حادثہ: یوکرین نے ایرانی پیش کش ٹھکرا دی

کیف: یوکرین نے طیارہ حادثے میں ہلاک ہونے والوں کے ورثا کو معاوضے کی ایرانی پیش کش ٹھکرا دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایران نے پی ایس 752 طیارے میں ہلاک ہونے والے ہر شخص کے لواحقین کو ڈیڑھ لاکھ ڈالر معاوضہ ادا کرنے کی تجویز دی تھی، تاہم یوکرین کی وزارت خارجہ اسے مسترد کر دیا۔

عرب نیوز کے مطابق یوکرین کی وزارت خارجہ کا مؤقف ہے کہ معاوضہ بلاشبہ انصاف کی جانب اہم قدم ہے، تاہم اس سے قبل یہ پورا سچ سامنے لانا ضروری ہے کہ طیارہ کن حالات میں گرا، ترجمان اولیگ نیکولینکو نے کہا اس کے بعد معاوضے کی بات ممکن ہے، معاوضوں کی ادائیگی بھی یک طرفہ فیصلے کے تحت نہ ہو بلکہ ان تمام حکومتوں کے ساتھ معاہدے کے ذریعے ہو جن کے شہری ہلاک ہوئے۔

یوکرین میں تعینات ایرانی سفیر منوچہر مرادی نے گزشتہ روز ایک ٹوئٹ میں کہا تھا کہ ایران لواحقین کو ڈیڑھ لاکھ ڈالر ادا کرنے کو تیار ہے۔

اس سے قبل کینیڈا، سویڈن، یوکرین اور برطانیہ کے وزرا پر مشتمل طیارہ حادثے کے متاثرین کے لیے بنائے گئے بین الاقوامی رابطہ اور رسپانس گروپ نے مشترکہ بیان میں مطالبہ کیا تھا کہ ایران گروپ میں شامل تمام ممالک کو معاوضہ ادا کر کے اپنی قانونی ذمہ داری پوری کرے۔

یاد رہے کہ 8 جنوری کو 2020 کو ایران کے پاسداران انقلاب نے یوکرین انٹرنیشنل ایئر لائنز کی پرواز کو تہران میں زمین سے فضا میں مار کرنے والے میزائلوں کے ذریعے نشانہ بنایا تھا، جس کے نتیجے میں طیارے میں سوار تمام 176 مسافر ہلاک ہو گئے تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں