The news is by your side.

Advertisement

”روس کل یوکرین پر حملہ کرے گا“

یوکرین کے صدر لودومیر زیلنسکی نے دعویٰ کیا ہے کہ روس کل کسی بھی وقت حملہ کرے گا جب کہ روس کا کہنا ہے کہ اس نے اپنی فوج سرحد ہٹا دی ہے۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق روس اور یوکرین کے مابین سرحدی کیشدگی کئی دنوں سے جاری ہے۔ روس نے دعویٰ کیا ہے کہ اس نے اپنے فوجیوں کو سرحد سے واپس بلا لیا ہے اور جنگ کا کوئی ارادہ نہیں۔

جب کہ یوکرینی صدر لودومیر زیلنسکی کا کہنا ہے کہ ہمارے ملک پر روس کل حملہ کرے گا، ہمیں اس بات کی اطلاع ملی ہے کہ روس حملہ کرنے کی تیاری کر رہا ہے۔

تاہم یوکرین کے صدر نے اس بات کا کوئی ذکر نہیں کیا کہ انہوں نے کس مأخذ کی بنیاد پر یہ دعویٰ کیا ہے۔ لودومیر زیلنسکی نے کل کے دن کو یوم وحدت و اتحاد قرار دیا ہے۔

دوسری جانب روس کا کہنا ہے کہ یوکرین پر حملہ کرنے کا کوئی ارادہ نہیں، نیٹو افواج کی پیشدمی روکنے کے لیے اپنی سرحد پر سکیورٹی یقینی بنانے کے لیے اقدامات کر رہے ہیں۔

خیال رہے کہ کچھ روز قبل امریکی اور روسی صدور کے درمیان یوکرین تنازع کی شدت کو کم کرنے کے لیے ٹیلی فونک رابطہ ہوا تھا۔ صدر جو بائیدن نے روس کو تنبیہ کی کہ اگر یوکرین پر حملہ کیا تو ماسکو کو اس کی بھاری قیمت ادا کرنی ہوگی۔

جب کہ پینٹاگون کا کہنا ہے کہ امریکا کا خیال ہے کہ روس کی جانب سے یوکرین پر حملے کا حتمی فیصلہ نہیں تاحال نہیں کیا گیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں