The news is by your side.

Advertisement

پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ ہماری مجبوری ہے، عمر ایوب

اسلام آباد : وفاقی وزیر پیٹرولیم عمر ایوب نے کہا ہے کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ ہماری مجبوری ہے، دیگر ممالک میں پیٹرول یہاں سے زیادہ مہنگا ہے۔

یہ بات انہوں نے اسپیکر اسد قیصر کی زیرصدارت قومی اسمبلی کے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہی، اس موقع پر وفاقی وزیرحماد اظہر، بابراعوان، علی محمدخان اور دیگر بھی ایوان میں موجود تھے۔

عمر ایوب نے کہا کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں پر بات کرنا اپوزیشن اراکین کا حق ہے، ہمارے پاس پیٹرول کے اپنے وسائل نہیں ہیں، عالمی منڈی میں پیٹرول46دن میں112فیصد بڑھا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کرنا ہماری مجبوری ہے، پاکستان میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں ایشیا میں سب سے کم ہیں، جنوری کے مقابلے میں پاکستان میں پیٹرول 17روپے فی لیٹر پیٹرول اس وقت بھی کم ہے۔

وفاقی وزیر نے بتایا کہ بنگلادیش میں پیٹرول 174روپے، بھارت میں 180روپے فی لیٹر جبکہ فلپائن میں پیٹرول 138روپے ،تھائی لینڈ میں 159 اور جاپان میں 196روپے فی لیٹر دستیاب ہے،

ان کا کہنا تھا کہ ہم نے پیٹرولیم مصنوعات پر مناسب ٹیکس رکھے ہیں،ماضی کے برعکس حکومت عالمی سطح پر قیمتوں کے اتار چڑھاؤ کے تحت کام کررہی ہے۔

مزید پڑھیں : پاکستان میں پیٹرول کی قیمت برصغیر میں سب سے کم ہے، انوکھی منطق

توانائی سے متعلق اظہار خیال کرتے ہوئے وفاقی وزیر نے کہا کہ ہم پاکستان میں بجلی کی پیداوار کو26ہزار میگاواٹ تک لے گئے ہیں، اس سلسلے میں کوہالہ میں 1115میگاواٹ کا منصوبہ شروع ہوگا، جو چیز ہماری حکومت کو ورثے میں ملی وہ مہنگی تھیں۔

واضح رہے کہ یکم جولائی سے پہلے ہی پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں پچیس روپے سے زائد اضافہ کردیا گیا، قیمتوں کا اطلاق بھی فوری ہی ہوگیا،اس اقدام پر عوام بلبلا اٹھے،

پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ہوشربا اضافے کے بعد پیٹرول پچیس روپے اٹھاون پیسے فی لیٹر مہنگا ہوکر سو روپے دس پیسے پر پہنچ گیا، ہائی اسپیڈ ڈیزل اکیس روپے اکتیس پیسے اضافے سے ایک سو ایک روپے چھیالیس پیسے اور مٹی کا تیل ساڑھے تیئیس روپے بڑھ کر انسٹھ روپے چھ پیسے کا ہوگیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں