The news is by your side.

Advertisement

اقوام متحدہ کی جانب سے لیبیا پارلیمنٹ پر حملے کی مذمت

طرابلس: اقوام متحدہ نے لیبیا کی پارلیمنٹ پر دھاوا بولنے والے مظاہرین کی مذمت کر دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق لیبیا میں معاشی بد حالی اور سیاسی تعطل کے باعث سیاسی جماعتوں سے نالاں مظاہرین نے پارلیمنٹ پر دھاوا بول کر اسے آگ لگا دی تھی، جس پر اقوام متحدہ کی جانب سے مذمت جاری کی گئی ہے۔

طبرق میں مظاہرین سیاسی جماعتوں کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے پارلیمنٹ کی عمارت میں گھس گئے تھے، مظاہرین نے پارلیمنٹ میں ہنگامہ آرائی کی، مشتعل مظاہرین کو دیکھ کر سیکیورٹی فورسز بھی پارلیمنٹ سے چلی گئی تھیں۔

دارالحکومت طرابلس سمیت لیبیا کے شہر بن غازی، طبرق اور دیگر شہروں میں احتجاج کا سلسلہ جاری ہے، واضع رہے کہ لیبیا میں 2011 میں نیٹو کی حمایت یافتہ بغاوت کے بعد سے بدامنی کا سلسلہ جاری ہے۔ اس بغاوت کے نتیجے میں مطلق العنان صدر معمر القذافی کی حکومت ختم ہوگئی تھی، مگراس کے بعد سے لیبیا انتشار کا شکار ہے۔

لیبیا میڈیا رپورٹس کے مطابق پارلیمنٹ پر حملے سے قبل جمعہ کو دوسرے شہروں میں بھی مظاہرے ہوئے، دارالحکومت طرابلس میں، ملک کے مغرب میں، کئی سو افراد ایک مرکزی چوک میں جمع ہوئے، جہاں انھوں نے مسلح ملیشیا کے خلاف احتجاج کیا اور بجلی کی بہتر فراہمی اور روٹی کی قیمتوں میں کمی کا مطالبہ کیا۔

لیبیا میں شہریوں کو کئی دنوں تک بجلی کی عدم فراہمی کا سامنا رہا، دوسری طرف سیاسی دشمنیوں کے باعث تیل کی متعدد تنصیبات کی بندش کی وجہ سے صورت حال مزید خراب ہو گئی ہے۔

طبرق میں احتجاج کے دوران ایک شہری نے بلڈوزر کے ذریعے پارلیمنٹ کا ایک دروازہ توڑا، جس کے بعد مظاہرین اندر داخل ہوئے اور توڑ پھوڑ مچائی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں