The news is by your side.

Advertisement

اقوام متحدہ نے صاف، صحت مند ماحول کو بنیادی حق تسلیم کر لیا

جنیوا: اقوام متحدہ نے صاف، صحت مند ماحول کو بنیادی حق تسلیم کر لیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل نے صاف، صحت مند ماحول تک رسائی کو انسانی حق قرار دے دیا۔

جنیوا میں قائم اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل نے جمعہ کے روز ایک قرارداد منظور کی ہے جس میں ‘محفوظ، صاف، صحت مند اور پائیدار ماحول تک رسائی کو بنیادی انسانی حق کے طور پر تسلیم کر لیا گیا ہے، اس کے باوجود کہ امریکا اور برطانیہ نے اس قرارداد پہلے منفی رد عمل ظاہر کیا تھا۔

اس کی تجویز کوسٹاریکا، مالدیپ، مراکش، سلووینیا، اور سوئٹزرلینڈ نے پیش کی تھی، جس کو 43 ووٹ ملے، مخالفت میں ایک بھی ووٹ نہیں پڑا، تاہم روس، بھارت، چین، اور جاپان غیر حاضر رہے جب کہ برطانیہ نے بالکل آخری لمحات میں اس کے حق میں ووٹ دیا، اور امریکا 47 رکنی کونسل کا رکن نہ ہونے کے باعث ووٹ نہ دے سکا۔

ابتدائی طور پر اسے 22 ممالک بشمول فن لینڈ، جرمنی اور شمالی مقدونیہ، فیجی اور مالدیپ نے تجویز کیا تھا، فیجی اور مالدیپ جزائر والی اقوام ہیں، جنھیں آب و ہوا کی ہنگامی صورت حال سے خاص طور پر خطرات لاحق ہیں۔

اگرچہ قرارداد اس بات کی پابند نہیں کرتی، تاہم یہ ریاستوں کو ماحولیاتی تحفظ کو اپنانے کی ترغیب دیتی ہے، اور ان پر دباؤ ڈالتی ہے کہ وہ 100 سے زیادہ ان ممالک میں شامل ہوں، جن میں صحت مند ماحول کے حوالے سے کچھ آئینی اقدامات کیے جا چکے ہیں۔

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) کے مطابق ماحولیات سے منسلک، ایک سال میں مرنے والوں کی تعداد 13.7 ملین ہے (ایک کروڑ 37 لاکھ)، جو تمام عالمی اموات کے تقریباً 24 فی صد کے برابر ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں