The news is by your side.

یوکرینی بچوں کی زبردستی روس منتقلی کے الزامات

اقوام متحدہ نے کہا کہ ایسے معتبر الزامات ہیں کہ روسی فورسز نے بڑے پیمانے پر جبری نقل مکانی اور ملک بدری کے پروگرام کے تحت یوکرین کے بچوں کو ’گود‘ لینے کے لیے روس بھیجا ہے۔

اقوام متحدہ کی اسسٹنٹ سیکرٹری جنرل برائے انسانی حقوق الزے برینڈز کیہرس نے بدھ کے روز اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس کو بتایا کہ روسی افواج "فلٹریشن” آپریشنز چلا رہی ہیں جس میں مقبوضہ علاقوں میں یوکرین کے باشندوں کو منظم سیکورٹی چیک کا سامنا کرنا پڑتا ہے جو کہ انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں ہیں۔

کیہرس نے کہا کہ بچوں کو روس کے مقبوضہ علاقے یا خود روسی فیڈریشن میں زبردستی منتقل کرنے کے قابل اعتماد الزامات سامنے آئے ہیں۔

Deputy Permanent Representative of Ukraine Khrystyna Hayovyshyn attends a UN Security Council meeting.

انہوں نے کہا کہ ہمیں تشویش ہے کہ روسی حکام نے والدین کی دیکھ بھال کے بغیر بچوں کو روسی شہریت دینے کے لیے ایک آسان طریقہ کار اپنایا ہے اور یہ بچے روسی خاندانوں کی طرف سے گود لینے کے اہل ہوں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمیں خاص طور پر تشویش ہے کہ ‘فلٹریشن’ کے طریقہ کار کے دوران خواتین اور لڑکیوں کو جنسی زیادتی کا خطرہ لاحق ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں