بانی ایم کیو ایم کے خلاف ریفرنس، برطانوی حکام کا جواب موصول -
The news is by your side.

Advertisement

بانی ایم کیو ایم کے خلاف ریفرنس، برطانوی حکام کا جواب موصول

اسلام آباد: بانی ایم کیو ایم کےخلاف پاکستانی وزارتِ داخلہ کی جانب سے بھیجے گئے ریفرنس پر برطانوی حکام کا جواب موصول ہوگیا جس میں 22 اگست کے واقعہ اور اے آر وائی پر حملے کی مذمت کی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق برطانوی وزارتِ داخلہ کے اعلیٰ حکام نے پاکستان کی جانب سے بانی ایم کیو ایم کے خلاف بھیجے گئے ریفرنس موصول ہونے کی تصدیق کردی ہے، جس میں 22 اگست کے واقعے اور اے آر وائی سمیت میڈیا ہاؤسز پر حملے کی مذمت کی گئی ہے۔

پڑھیں:   قائد متحدہ کے خلاف کارروائی، وزارت داخلہ نے برطانیہ کو ریفرنس ارسال

برطانوی حکام نے جواب میں تحریر کیا  گیا ہے کہ ’’ریفرنس موصول ہونے کے بعد  میٹروپولیٹن پولیس کو بھیج دیا گیا ہے جس کی جانچ پڑتال کے لیے تمام قانونی پہلوؤں کا جائزہ لیا جارہا ہے۔ برطانوی حکام نے مزید کہا ہے کہ ’’برطانوی پولیس پاکستان کی جانب سے بھیجے گئے ریفرنس کے ساتھ منسلک تمام ثبوتوں اور شواہد کا تجزیہ کرے گی تاہم اگر مزید ثبوتوں کی ضرورت پڑی تو ہائی کمیشن کے ذریعے پاکستان سے رابطہ کیا جائے گا‘‘۔

پڑھیں :    قائد ایم کیوایم برطانوی شہری ہیں،ریفرنس بھیجوا رہے ہیں،پرویزرشید

برطانوی وزارتِ داخلہ نے مزید کہا ہے کہ ’’میٹروپولیٹن پولیس آزاد اور برطانوی قانون کے مطابق اپنی ذمہ داریاں نبھاتی ہے اور اس ریفرنس پر بھی نہایت توجہ سے مشاہدہ کر نے کے بعد کوئی فیصلہ کیا جائے گا‘‘۔

خبر پڑھیں:اشتعال انگیز تقریر، پاکستانی حکام سے رابطے میں ہیں، اسکاٹ لینڈ یارڈ

یاد رہے برطانوی قوانین کے مطابق وہاں مقیم شہری کسی قسم کی دہشت گردی میں اگر ملوث پایا جاتا ہے تو اُس کے خلاف قانونی طور پر کارروائی کی جاتی ہے۔ قائد ایم کیو ایم پہلے ہی منی لانڈرنگ اور ڈاکٹر عمران فاروق کیس میں زیر تفتیش ہیں ۔ پاکستان کی جانب سے الطاف حسین کے خلاف کئی ریفرنسس بھیجے گئے ہیں تاہم برطانوی حکومت کی جانب سے پہلی بار باضابطہ جواب دیا گیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں