The news is by your side.

Advertisement

پاکستانی طالب علم امریکہ سےواپس وطن آکرعوام کی خدمت کےلیے پرعزم

پاکستانی طالب علم امریکہ میں ہنگامی طبی امداد فراہم کرنے کا جدید ترین کورس کرکے وطن واپس آکر اپنی خدمات پیش کرنے کے لیے تیار‘ عدنان کا کہنا ہے پاکستا ن جیسی ایمرجنسی صورتحال امریکہ میں بھی پیش آتی ہے۔

تفصیلات کےمطابق 27سالہ پاکستانی عدنان اللہ کےلیےایک نیاتجربہ ہےکہ وہ امریکہ کےنارتھیمپٹن کمیونٹی کالج میں ہنگامی طبی ٹکنیشن کورس کی تعلیم حاصل کررہاہےاورایک یکسرمختلف کلچر سے بھی متعارف ہورہاہے۔

پاکستانی طالب اسکالر شپ پروگرام کےتحت امریکہ میں تعلیم حاصل کررہاہےکہ کس طرح وہ اپنے ملک میں ہنگامی طبی خدمات کےشعبے میں مزید بہتری لاسکتاہے۔

عدنان اللہ کا کہناہےکہ جب میں اپنے ملک کا موازنہ یہاں سے کرتا ہوں تو مجھے بہت فرق نظرآتا ہےحالانکہ یہاں بھی پاکستان کی طرح ہنگامی حالات کاسامنا کرنا پڑتا ہےلیکن یہاں ان ایمرجنسیوں سے نمٹنے کےلیے جدیدسامان کے ساتھ نئےطریقہ کار بھی ہیں۔

مردان کا رہنے والا عدنان اللہ ان 16 طالب علموں میں سے ہیں جن کا تعلق مختلف ممالک سے ہے اور وہ سب امریکہ میں اسکالرشپ کےذریعے ہنگامی طبی ٹکنیشن کی تعلیم حاصل کررے ہیں۔


مزید پڑھیں: پاکستانی نوجوان کا کارنامہ، بلڈ ڈونیشن ایپ متعارف


پاکستانی طالب علم نے امریکی معاشرے کےحوالے سے اپنے خیالات کا اظہارکرتے ہوئےکہاکہ جب وہ یہاں آرہاتھا تواسےبتایاگیاکہ امریکی اچھے نہیں وہ تمہاری کوئی مدد نہیں کریں گے لیکن یہاں آکر مجھے احساس ہوا کہ یہ سب غلط ہے یہ لوگ بہت اچھے ہیں۔

امریکہ میں تعلیم حاصل کرنے سے متعلق عدنان کاکہناتھاکہ یہاں اسکالر شپ کے ذریعے تعلیم حاصل کرنے کا موقع ملنا بہت مشکل ہے۔

ایسٹن ایمرجنسی اسکواڈ کےڈائریکٹرجوزف کاکہناہےکہ عدنان ایک قابل طالب علم ہے اور وہ ہمیشہ سوالات کرتا رہتا ہے اور جاننے کی کوشش کرتا ہے ہم یہاں کس طرح لوگوں کو اپنی خدمات فراہم کرتے ہیں۔

انہوں نےکہاکہ عدنان کے ساتھ کام کرنےکاہماری ٹیم کا تجربہ شاندار رہاہے اور ہمیں یقین ہےکہ وہ اپنے ملک جاکر اپنے اس تجربےکو اپنے لوگوں کی بہتری کے لیے استعمال کرے گا۔

واضح رہےکہ پاکستانی طالب عدنان گزشتہ سال جولائی میں امریکہ تعلیم حاصل کرنے کے لیےگیاتھا اور اس کا کورس رواں سال مئی میں مکمل ہوجائےگا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں