The news is by your side.

Advertisement

میانمارکی فوج روہنگیا مسلمانوں کے خلاف جنگی جرائم میں ملوث ہے، اقوام متحدہ

گزشتہ ہفتے بھی میانمار کی فوج نے ریخائن میں بلیک آؤٹ کر کے انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں کیں،تحقیق کار

جنیوا : میانمار کی فوج کی طرف سے روہنگیا مسلمانوں پر کیے جانے والے مظالم کھل کر دنیا کے سامنے آگئے۔ اقوام متحدہ کے تحقیق کاروں نے فوجی آپریشن کے نام پرمسلمانوں کے قتل عام ،اجتماعی زیادتی اور املاک کو جلانے کی تصدیق کر دی ہے۔

غیرملکی خبررسا ں ادارے کے مطابق اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ میانمارکی فوج روہنگیا مسلمانوں کے خلاف جنگی جرائم میں ملوث ہے۔

جنیوا میں ہونے والے اجلاس میں یو این تحقیق کاروں کا کہنا تھا کہ برما کی فوج ریخائن ریاست میں اب بھی انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں جاری رکھے ہوئے ہے۔

رپورٹ کے مطابق گزشتہ ہفتے بھی میانمار کی فوج نے ریخائن میں بلیک آؤٹ کر کے انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں کیں۔ اقوام متحدہ کے تحقیق کاروں کا کہنا تھا کہ 2017 میں برمی فوج نے مسلمانوں کی نسل کشی کے لئے ریخائن میں آپریشن کیا جس کے بعد 7لاکھ 30 ہزار مسلمان بنگلہ دیش ہجرت کرنے پر مجبور ہوئے۔

مزید پڑھیں: روہنگیا مسلمانوں کے قتل عام میں ملوث سات فوجی اہلکار سزا پوری کیے بغیر رہا

عالمی ادارے کی رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ میانمار کی فوج بڑے پیمانے پر مسلمانوں کی نسل کشی، اجتماعی زیادتی اور املاک کو جلانے میں ملوث بھی ہے۔ اپریل کے مہینے میں بھی برمی فوج نے ہیلی کاپٹر سے کھیتوں میں کام کرنے والے افراد پر فائرنگ کی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں