The news is by your side.

Advertisement

جب سالک کے قلم نے لارڈ ویول کی خبر لی!

عبد المجید سالک اردو کے ممتاز شاعر، جیّد صحافی، افسانہ نگار اور کالم نویس تھے جنھوں‌ نے اپنے وقت کے مقبول ترین اخبار’زمیندار‘ کی ادارت کے فرائض‌ بھی انجام دیے۔ اس سے قبل وہ تہذیبِ نسواں‌ اور پھول جیسے معتبر رسائل کے مدیر رہے۔ ان کی مشہور تصانیف میں‌ ’ذکرِ اقبال‘، ’مسلم صحافت ہندوستان میں‘، ’یارانِ کہن‘، ’خودکشی کی انجمن‘، ’قدیم تہذیبیں‘ اور ’کاریگری‘ شامل ہیں‌۔

عبدالمجید سالک ایک مقبول کالم نویس تھے۔ انھوں‌ نے لارڈ ویول کے ہندوستان کا وائسرے مقرر ہونے پر اپنے ایک فکاہیہ میں‌ زور دار جملہ لکھا۔

واضح کرتے چلیں‌ کہ لارڈ ویول بائیں‌ آنکھ کی بینائی سے محروم تھا۔ ادھر مولانا عبدالمجید سالکؔ جو خود بھی ہشاش بشاش رہنے کے عادی تھے، ان کی تحریروں میں بھی ان کی طبیعت کی طرح شگفتگی ہوتی تھی۔ لارڈ ویول کے وائسرائے مقرر ہونے کا ذکر کرتے ہوئے انھوں‌ نے ہندوستانیوں‌ انوکھے ڈھنگ سے بتایا کہ ان کا وائسرائے ایک آنکھ سے محروم ہے۔ سالک نے اپنے کالم میں‌ شگفتہ پیرائے میں‌ زبردست طنز کیا اور لکھا:

’’لارڈ ویول کے وائسرائے مقرر ہونے کا یہ وعدہ ہے کہ وہ سب کو ایک آنکھ سے دیکھیں گے۔‘‘

Comments

یہ بھی پڑھیں