The news is by your side.

Advertisement

امریکا نے‌ کرونا کی ممکنہ ویکسین کا 90 فیصد اسٹاک خرید لیا

واشنگٹن: امریکا نے دنیا بھر سے کرونا کی ممکنہ ویکسین کا 90 فیصد اسٹاک خرید لیا، مارکیٹ میں اب یہ دوا اکتوبر کے بعد ہی دستیاب ہوگی۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹ کے مطابق امریکا کے شعبہ صحت برائے انسانی خدمات (ایچ ایچ ایس) نے کرونا کے کے لیے مؤثر قرار دی جانے والی دوا ریمیڈی سیور دنیا بھر سے خرید لی۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ امریکا نے اتنے بڑے پیمانے پر ویکسین کی خریداری کی کہ اب اُسے آئندہ تین ماہ تک دوا کی کمی کا سامنا نہیں‌کرنا پڑے گا۔

مزید پڑھیں: کورونا وائرس کی دوا : روس کو بڑی کامیابی مل گئی

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ گیلیڈ سائنسز کی جانب سے تیار کی جانے والی ریمیڈی سیور نےٹرائل کے دوران اب تک سب سے بہترین نتائج دیے، اس ویکسین کی آزمائش ویسے تو کم مریضوں پر کی گئی تھی مگر ماہرین نے اُسے صحت بخش قرار دیا۔

امریکا نے جولائی کے مہینے میں ویکسین کا 90 فیصد اسٹاک آئندہ ماہ اگست اور ستمبر کے لیے محفوظ کرلیا۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ امریکا کی بڑے پیمانے پر خریداری کی وجہ سے ریمیڈی سیور کی دنیا بھر میں قلت پیدا ہوجائے گی اور اکتوبر کے مہینے تک یہ کسی بھی ملک میں آسانی سے دستیاب نہیں ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں: کرونا وائرس: یورپ نے ویکسین بننے سے قبل ہی خرید لی

یاد رہے کہ ریمیڈی سیور اینٹی وائرل دوا  ہے جسے عام طور پر زکام کے لیے استعمال کیا جاتا ہے، امریکا، جاپان اور روس کی حکومتوں نے اس دوا کو کرونا مریضوں پر استعمال کرنے کی اجازت دے دی ہے۔

 

Comments

یہ بھی پڑھیں