The news is by your side.

Advertisement

امریکی مرکز ی بینک کی جانب سے شرح سود میں رد و بدل کا فیصلہ آج کیا جائے گا

واشنگٹن: امریکی مرکز ی بینک کی جانب سے شرح سود میں رد و بدل کا فیصلہ آج کیا جائے گا، بینک کو شرح سود میں اضافے کی وجہ سے امریکی صدر کی جانب سے تنقید کا بھی سامنا ہے۔

تفصیلات کے مطابق مرکزی بینک امریکا نے ایک بار پھر شرح سود میں رد و بدل کا فیصلہ کر لیا ہے، فیڈرل ریزرو کی جانب سے شرح سود میں اضافہ کیے جانے کا امکان ہے۔

امریکی مرکزی بینک کو صدر ٹرمپ کی جانب سے تنقید کا بھی سامنا ہے۔

کہا جا رہا ہے کہ ممکنہ طور پر مرکزی بینک شرح سود میں 25 بیسس پوائنٹس اضافہ کر رہا ہے۔

خیال رہے کہ امریکی مرکزی بینک کو صدر ٹرمپ کی جانب سے تنقید کا بھی سامنا ہے، تاہم امریکی مرکزی بینک نے آئندہ سال بھی 3 بار شرح سود میں اضافے کا عندیہ دے دیا ہے۔

دوسری طرف شرح سود میں اضافے سے قبل ایشیائی اسٹاک مارکیٹس میں ملا جلا رجحان دیکھاگیا ہے۔ پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں بھی مندی ریکارڈ کی جا رہی ہے۔


یہ بھی پڑھیں:  اسٹيٹ بينک نے مانيٹری پاليسی کا اعلان کردیا، شرح سود بلند ترین سطح پر


اسٹاک مارکیٹ میں 100 انڈیکس میں 164 پوائنٹس تک کی کمی ریکارڈ کی گئی، گزشتہ روز یورپی اسٹاک مارکیٹوں کا اختتام منفی ہوا تھا۔

واضح رہے کہ اس وقت ملک کو روپے کی قدر میں ریکارڈ کمی اور شرح سود میں زبردست اضافے کی دوہری تلوار کا سامنا ہے۔

اسٹيٹ بينک نے اگلے دو ماہ کے لیے مانيٹری پاليسی کا اعلان کرتے ہوئے ڈیڑھ فی صد اضافے سے شرح سود دس فی صد مقرر کر دیا ہے، جس کے بعد شرح سود پانچ سال کی بلند ترین سطح پرپہنچ گئی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں