The news is by your side.

Advertisement

امریکی ملٹری اتاشی کو پاکستان سے جانے سے روک دیا گیا

راولپنڈی: پاکستانی شہری کو گاڑی کی ٹکر سے ہلاک کرنے والے امریکی ملٹری اتاشی کرنل جوزف کو عین اس وقت پاکستان سے جانے سے روک دیا گیا جب امریکا کا خصوصی طیارہ انہیں لینے کے لیے نور خان ایئر بیس پر موجود تھا۔

تفصیلات کے مطابق اب سے چند گھنٹے قبل امریکا کا خصوصی طیارہ اپنے ملٹری اتاشی کرنل جوزف کو لینے کے لیے نور خان ایئر بیس پر پہنچا تھا۔

وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) کے ذرائع کے مطابق طیارہ کرنل جوزف کو لے کر قطر کی طرف اڑان بھرنے والا تھا۔

کرنل جوزف کا پاسپورٹ ایف آئی اے امیگریشن کے پاس تھا۔ اس موقع پر ایف اے آئی کا عملہ انہیں روکنے یا نہ روکنے کے لیے حکام بالا کی اجازت کا منتظر تھا جو موصول ہوتے ہی کرنل جوزف کو پاکستان سے روانہ ہونے سے روک دیا گیا۔

ایف آئی نے فوری طور پر کرنل جوزف کا پاسپورٹ بھی اپنی تحویل میں لے لیا۔

خیال رہے کہ 8 اپریل کو عتیق کی ہلاکت اس وقت ہوئی جب مبینہ طور پر نشے میں امریکی فوجی اتاشی کرنل جوزف نے ٹریفک سگنل کو توڑتے ہوئے اس پر گاڑی چڑھادی۔

واقعے کے تھوڑی دیر بعد ایک اور گاڑی سفارتکار کو لینے پہنچ گئی۔ موقع پر موجود پولیس اہلکاروں نے امریکی سفارت کار کا میڈیکل کروانے کی کوشش کی تو انہوں نے یہ کہہ کر منع کردیا کہ ہم سفارت کار ہیں آپ ہمیں گرفتار نہیں کر سکتے۔

بعد ازاں دفتر خارجہ نے امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل کو طلب کر کے واضح کیا کہ اس معاملے پر پاکستان کے قانون اور ویانا کنونشن کے مطابق عمل کیا جائے گا۔ امریکی سفیر نے ملکی قوانین کی خلاف ورزی کی ہے جسے نظر انداز نہیں کیا جاسکتا۔

وفاقی حکومت نے کرنل جوزف کا نام واچ لسٹ میں ڈالنے کے بعد اس کا ڈرائیونگ لائسنس بھی منسوخ کردیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں