The news is by your side.

روس کے اندر گھس کر فضائی اڈوں پر یوکرینی حملوں پر امریکا کا فوری رد عمل

واشنگٹن: امریکا نے کہا ہے کہ وہ روس کے اندر یوکرین کے حملوں کی ’حوصلہ افزائی‘ نہیں کرتا۔

الجزیرہ کے مطابق یوکرین کی جانب سے سینکڑوں کلومیٹر روسی فضائی حدود کے اندر داخل ہو کر فضائی اڈوں پر حملوں کی واضح نئی صلاحیت کے مظاہرے کے بعد، امریکی محکمہ خارجہ نے کہا ہے کہ امریکا یوکرین کو اپنی سرحدوں سے باہر حملہ کرنے کے قابل نہیں بنا رہا ہے، نہ ہی اس کی حوصلہ افزائی کر رہا ہے۔

نیڈ پرائس نے صحافیوں کو بتایا کہ ’’ہم یوکرین کو اس کی سرحدوں سے باہر حملہ کرنے کے قابل نہیں بنا رہے ہیں، ہم یوکرین کو اس کی سرحدوں سے باہر حملہ کرنے کی ترغیب بھی نہیں دے رہے ہیں۔‘‘

انھوں نے مزید کہا کہ امریکا یوکرین کو وہ فراہم کر رہا ہے جو اسے اپنے دفاع کے لیے اپنی خود مختار سرزمین پر استعمال کرنے کی ضرورت ہے۔

روس اور یوکرین نے ڈونیسک میں تباہی مچا دی

دوسری طرف کیف نے براہ راست حملوں کی ذمہ داری تو قبول نہیں کی، لیکن اس کے باوجود انھوں نے اس کا جشن منایا، نیڈ پرائس نے کہا کہ اس بات کی تصدیق نہیں ہوئی کہ حملے یوکرین کی طرف سے کیے گئے تھے۔

ادھر امریکی نائب وزیر خارجہ وینڈی شرمین نے کہا ہے کہ یوکرین میں امن کا تیز ترین راستہ روس کے لیے تعینات فوجیوں کو واپس بلانا ہی ہے، اس لیے وہ ہر حال میں اپنے فوجیوں کو یوکرین سے ہٹائے، انھوں نے مزید کہا کہ مغربی ریاستیں یوکرین کو ماسکو کے ’بلا اشتعال‘ حملے کے خلاف مزاحمت میں مدد کرنے میں کامیاب ہو رہی ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں