The news is by your side.

Advertisement

افغانستان: 2ڈرون حملے، القاعدہ کے 2اہم کمانڈر سمیت 15دہشت گرد ہلاک

کابل : افغان صوبے کنڑ میں دو ڈرون حملوں کے نتیجے میں 15دہشت گرد ہلاک ہوگئے، ہلاک ہونے والوں میں القاعدہ کے دو اہم کمانڈر بھی شامل ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق امریکہ نے افغانستان کے کنڑ صوبے میں القاعدہ کے ایک سینیئر رہنما پر ڈرون حملہ کیا جس میں پاکستانی طالبان سمیت 15 شدت پسند مارے گئے ہیں۔

kunr

امریکی فوج کے مطابق حملے میں القاعدہ کے شمالی مغربی افغانستان کے امیر فاروق القحطانی اور ان کے نائب بلال المتعبی کو نشانہ بنایا گیا، جس میں القاعدہ کے دونوں رہنما مارے گئے ہیں۔

قحطانی اور ان کے نائب کو اس وقت نشانہ بنایا گیا جب وہ کنڑ کے ضلع غازی آباد کے ہلگل گاؤں میں تھے۔ یہ دونوں دو الگ الگ عمارتوں میں تھے، ان عمارتوں پر متعدد ڈرونوں نے بیک وقت حملہ کیا گیا۔

پینٹاگان کے ترجمان پیٹر کک کا کہنا ہے کہ القحطانی اور العتبی کی ہلاکت کی اگر تصدیق ہو جاتی ہے کہ تو یہ القاعدہ کے لیے ایک بہت بڑا دھچکا ہوگا۔


مزید پڑھیں : طالبان رہنما ملا منصور کی ہلاکت کی تصدیق


واضح رہے رواں سال مئی میں پاک افغان سرحد کے قریب امریکی ڈرون حملے میں افغان طالبان کے امیر ملامنصور اختر ہلاک ہوگیا تھا،  امریکی ڈرون طیاروں نے بلوچستان کے علاقے میں ایک گاڑی کو نشانہ بنایا، جس میں ایک ڈرائیور سمیت تحریک طالبان کا امیر ملااختر منصور موجود تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں