The news is by your side.

Advertisement

تجارتی جنگ سے متعلق مذاکرات ناکام، چینی مصنوعات پر اضافی محصولات عائد

واشنگٹن: چین اور امریکا کے درمیان تجارتی جنگ شدت اختیار کرگئی، امریکا نے چینی منصوعات پر نئے اضافی محصولات عائد کردیے۔

تفصیلات کے مطابق تجارتی جنگ کے خاتمے کے لیے امریکا اور چین کے درمیان مذاکرات جاری تھے جو اس اضافی محصولات کے بعد ناکام ہوچکے ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ امریکا کی جانب سے چینی مصنوعات پر دو سو بلین ڈالر کے نئے درآمدی ٹیکس عائد کیے گئے ہیں، جن چینی مصنوعات پر اضافی محصولات لگائے گئے ہیں، ان میں موبائل فون، کمپیوٹر اور اس میں استعمال ہونے والے آلات، سلے ہوئے کپڑے اور کھلونے شامل ہیں۔

امریکی اقدام کے ردعمل میں چین نے شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے امریکا پر جوابی محصولات عائد کرنے کی دھمکی دی ہے، اس سے قبل بھی چین جواباً 110 بلین ڈالر اضافی محصولات امریکی منصوعات پر عائد کرچکا ہے۔

چینی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکا تجاری جنگ کے خاتمے کے لیے غیرسنجیدگی کا مظاہرہ کررہا ہے۔ جبکہ ردعمل میں امریکی حکام نے موقف اختیار کیا ہے کہ چین مذاکرات سے پیچھے ہٹ رہا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق چینی مصنوعات پر اضافی محصولات کے بعد دونوں ملکوں کے درمیان مذاکرات بھی ناکام ہوچکے ہیں، قوی امید ہے کہ فریقین تنازعے کے کسی حل تک پہنچیں۔

امریکا نے چین پر عائد 200 ارب ڈالر کے محصولات موخر کرنے کا فیصلہ کرلیا

خیال رہے کہ فریقین کے درمیان معاملے کے حل کے لیے مذاکراتی دور کا سلسلہ بیجنگ اور واشنگٹن میں مرحلہ وار جاری ہے، تاہم اب اسے بے نتیجہ قرار دیا جارہا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں