The news is by your side.

Advertisement

امریکی ایوان میں غیرقانونی تارکین وطن کیخلاف کریک ڈاؤن کا بل منظور

واشنگٹن : امریکی ایوان نمائندگان نے غیرقانونی تارکین وطن کیخلاف کریک ڈاؤن کا بل منظورکر لیا۔

امریکی ایوان میں غیرقانونی تارکین وطن کے خلاف کریک ڈاؤن کا بل منظور کرلیا گیا، صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے حمایت یافتہ بل کے حق میں دو سو اٹھائیس اور مخالفت میں ایک سوپچانوے ووٹ ڈالے گئے۔

بل کے تحت امریکا میں موجود غیر قانونی تارکین وطن کے خلاف بڑے پیمانے پر کارروائی کی جائیگی، بل سینٹ کی منظوری کے بعد باقاعدہ قانون بن جائے گا۔

اس سے قبل صدر ٹرمپ کے سفری پابندی کے حکمنامے پر عملدرآمد کا آغاز ہوگیا، چھ مسلمان ملکوں کے شہری اب امریکا نہیں جاسکیں گے۔


مزید پڑھیں : امریکہ کی 6 مسلم ممالک کےشہریوں پرسفری پابندیاں نافذ


یاد رہے کہ امریکی سپریم کورٹ نے مسلمان ملکوں پر سفری پابندیوں کا صدر ٹرمپ کا حکم نامہ جزوی طور پر بحال کردیا تھا اور ساتھ ہی سپریم کورٹ کی طرف سے یہ بھی کہا گیا کہ عدالت ان سفری پابندیوں سے متعلق اکتوبر میں تفصیلی سماعت کے بعد ہی ایک مفصل فیصلہ سنائے گی۔

واضح رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے صدراتی حکم نامے کے ذریعے چھ ایسے ملکوں کے شہریوں کے امریکا میں داخلے پر 3 ماہ کے لیے پابندی لگا دی تھی، جن کی آبادی اکثریتی طور پر مسلمان ہے، جن میں ایران، لیبیا، صومالیہ، سوڈان، شام اور یمن شامل ہیں۔


اگرآپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اوراگرآپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پرشیئرکریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں