The news is by your side.

Advertisement

انتظار ختم، امریکی انٹیلیجنس نے خلائی مخلوق سے متعلق خفیہ رپورٹ جاری کر دی

واشنگٹن: خلائی مخلوق کی حقیقت سے متعلق جس رپورٹ کا شدت سے دنیا بھر میں انتظار کیا جا رہا تھا، امریکی انٹیلیجنس نے وہ رپورٹ آخر کار جاری کر دی۔

تفصیلات کے مطابق امریکی انٹیلیجنس کا کہنا ہے کہ انھیں خلائی مخلوق اور ان کی فضائی ٹیکنالوجی سے متعلق کوئی ثبوت نہیں ملے، حکام نے کہا کہ حالیہ برسوں میں پیش آنے والے ایسے تمام واقعات بہ ظاہر کسی خلائی مخلوق کی طرف سے نہیں تھے۔

انٹیلیجنس حکام کے مطابق ايسے تمام واقعات جن ميں کسی خلائی جہاز کو رپورٹ کيا گيا، اور جس سے نہ تو رابطہ ہو سکا، نہ ہی اس کی شناخت اور ساخت کا کوئی علم حاصل ہوا، وہ جہاز بہ ظاہر کسی خلائی مخلوق کا نہيں تھا۔

خیال رہے کہ سازشی نظريات کے حامی لوگ اور حلقے يہ کہتے آئے ہيں کہ زمين کے علاوہ بھی کائنات میں کہيں اور زندگی موجود ہے، تاہم امریکا اس کے شواہد پر پردہ ڈال رہا ہے، اس تناظر میں امریکی انٹیلیجنس کی اس رپورٹ کا کئی حلقوں ميں بے تابی سے انتظار کيا جا رہا تھا۔

امریکی خفیہ ایجنسیاں اڑن طشتریوں سے متعلق کیا جانتی ہیں؟ بتانے کے لیے دن کم رہ گئے

آپ کو یہ جان کر بھی حیرت ہوگی کہ گزشتہ برس اسرائیل کے خلائی سیکیورٹی ادارے کے سابق سربراہ نے دعویٰ کیا تھا کہ امریکا اور اسرائیل خلائی مخلوق سے رابطے میں ہیں، سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ یہ راز فاش کرنے والے تھے مگر انھیں روک دیا گیا۔

ڈاکٹر حائم اشاد نے یہ بھی کہا تھا کہ امریکا اور خلائی مخلوق کے درمیان معاہدے بھی ہو چکے ہیں، انھوں نے دعویٰ کیا تھا کہ صدر ٹرمپ کو راز افشا کرنے سے کہکشانی فیڈریشن (خلائی مخلوق کا علاقہ) نے روکا تاکہ دنیا میں ہیجان نہ پھیلے، کیوں کہ انسانیت ابھی اس کے لیے تیار نہیں۔

اسرائیلی وزرات دفاع کی اسپیس سیکیورٹی ڈائریکٹوریٹ کے سابق سربراہ کے دعوے یہیں تک ہی محدود نہ تھے بلکہ انھوں نے یہ بھی کہا تھا کہ امریکا اور خلائی مخلوقوں کے درمیان باہمی تعاون کے معاہدے ہو چکے ہیں، جن میں مریخ میں زیر زمین بیس کا قیام بھی شامل ہے، جہاں امریکی خلا باز اور خلائی مخلوق کے نمائندے موجود ہوں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں