The news is by your side.

Advertisement

ٹرمپ کو ’پاگل‘ کہنے پر امریکی وزیر دفاع کو برطرف کیے جانے کا امکان

واشنگٹن : امریکی صدر ڈونلڈ کو وزیر دفاع جیمز میٹس کی جانب سے ’پاگل‘ کہے جانے پر امریکا کی وفاقی کابینہ سے برطرف کیے جانے کا امکان ظاہر کیا جارہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا منصب صدارت سنبھالنے کے بعد سے ایران کے ساتھ طے شدہ جوہری معاہدے کی انخلا، شمالی کوریا کے ساتھ جنگی مشقیں اور دیگر معاملات میں جارحانہ فیصلوں کے باعث امریکا کی وفاقی کابینہ کے افراد بھی ٹرمپ کی مخالفت کرنے لگے۔

امریکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ گذشتہ کچھ ماہ سے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور وزیر دفاع جیمز میٹس کے درمیان نیٹو سے متعلق پالیسی پر شدید اختلافات چل رہے ہیں۔

امریکی صدر اور وزیر دفاع کے درمیان نیٹو پالیسی کے حوالے سے چپقلش اس بات پر ہے کہ شمالی کوریا کے ہمراہ فوجی مشقیں کی جائیں یا نہیں، دوسری جانب جیمز میٹس اور ٹرمپ، ایران کے ساتھ طے ہونے والے جوہری معاہدے سے دستبردار ہونے پر بھی معاملات خراب ہیں۔

امریکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ وزیر دفاع جیمز میٹس نے اخلاقیات سے عاری ہوکر امریکی صدر ٹرمپ کو پاگل کہہ دیا تھا،جس کے بعد امکان ظاہر کیا جارہا ہے کہ ٹرمپ امریکا کے وسط مدتی انتخابات کے بعد برطرف نہ کردیں۔

مقامی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ جیمز میٹس نے امریکی انتظامیہ میں جو مدت گزاری ہے اس دوران انہوں نے خود کو معاملات سے دور رکھنے کی کوشش کی ہے۔

خیال رہے کہ اسی ماہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اہم اقتصادی مشیر گیری کوہن اور مشیر برائے قومی سلامتی جنرل مک ماسٹر اپنے عہدے سے استعفیٰ دے چکے ہیں، دونوں امریکی رہنماؤں کو صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی اقتصادی پالیسیوں سے اختلاف تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں