The news is by your side.

Advertisement

امریکا میں پولیس کے ہاتھوں ایک اور سیاہ فام قتل

نیویارک: امریکا میں پولیس نے ایک اور سیاہ فام شخص کو قتل کردیا۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق امریکی ریاست لیوزیانا میں پولیس کی فائرنگ سے 31 سالہ سیاہ فام شخص ہلاک ہوگیا، مقتول کی شناخت ٹریفو کے نام سے ہوئی۔

امریکی پولیس کا دعویٰ ہے کہ ہمیں رات 8 بجے کال موصول ہوئی اور بتایا گیا کہ ایک شخص اسٹور میں گھسنے کی کوشش کررہا ہے اور اس کے ہاتھ میں چاقو بھی ہے۔

امریکی پولیس کے مطابق پولیس نے موقع پر پہنچ کر اس شخص کو پکڑنے کی کوشش کی تاہم وہ فرار ہوگیا اور بھاگ کر دوسرے اسٹور میں گھسنے کی کوشش کرنے لگا اس دوران پولیس نے فائرنگ کردی۔

رپورٹ کے مطابق سیاہ فام شخص کو پولیس کی جانب سے گیارہ گولیاں ماری گئیں، واقعے کے بعد مختلف علاقوں میں کشیدگی پھیل گئی اور امریکی پولیس کے خلاف احتجاج کیا جارہا ہے۔

واضح رہے 25 مئی کو جارج فلائیڈ کی ہلاکت پولیس حراست میں اس وقت ہوئی جب ایک پولیس اہلکار نے 9 منٹ تک اس کے گلے کو اپنے گھٹنے تلے دبائے رکھا اور اس دوران وہ مدد کیلیے پکارتا رہا اور کہتا رہا کہ ’میرا دم گھٹ رہا ہے‘ لیکن پولیس اہلکار نے اس کی ایک نہ سنی۔

بعدازاں سیاہ فام شہری جارج فلائیڈ کے قتل میں ملوث ملزم پولیس آفیسر کو عدالت نے ضمانت پر رہا کردیا، آفیسر تھامس لین کو 10 لاکھ ڈالر کی ضمانت پر آزادی ملی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں