The news is by your side.

Advertisement

امریکی صدر اچانک غیر مقبول ہو گئے

واشنگٹن: امریکی صدر جو بائیڈن اچانک غیر مقبول ہو گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق امریکی نیوز ایجنسی ایسوسی ایٹڈ پریس کے ایک سروے میں معلوم ہوا ہے کہ افغانستان کی صورت حال سنبھالنےمیں ناکامی اور انخلامیں جلد بازی کی وجہ سے جو بائیڈن کی مقبولیت میں ڈرامائی کمی آ گئی ہے۔

سروے رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ امریکیوں کی ایک نمایاں اکثریت کو شک ہے کہ افغانستان کی جنگ مفید تھی، یہاں تک کہ صدر بائیڈن خارجہ پالیسی اور قومی سلامتی کو جس طرح لے کر چل رہے ہیں، اس پر امریکا کہیں زیادہ تقسیم نظر آ رہا ہے۔

سروے کے مطابق امریکی صدر جو بائیڈن کی مقبولیت کا گراف 50 فی صد سے بھی نیچے آ گیا ہے، اور امریکا کے صرف 25 فی صد عوام جو بائیڈن کی افغان پالیسی کے حق میں ہیں۔

بائیڈن نے کابل حکومت کی حفاظت کے لیے 2500 فوجی کیوں نہ چھوڑے؟

سروے میں دو تہائی نے کہا کہ وہ نہیں سمجھتے کہ امریکا کی طویل ترین جنگ مفید تھی، جب کہ 47 فی صد نے بین الاقوامی امور کے انتظام کے لیے بائیڈن کی توثیق کی، اور 52 فی صد نے قومی سلامتی کے حوالے سے بائیڈن کی حمایت کی۔

یہ سروے 12 سے 16 اگست کو کیا گیا تھا، ایسے میں کہ افغانستان میں دو دہائیوں کی جنگ ختم ہو گئی ہے، اورطالبان دوبارہ اقتدار میں آ گئے ہیں، انھوں نے دارالحکومت کابل پر بھی قبضہ کر لیا ہے۔

طالبان نے مجموعی طور پر معاہدے کی پاسداری کی، جوبائیڈن

اس صورت حال پر بائیڈن کو واشنگٹن میں دو طرفہ مذمت کا سامنا کرنا پڑا ہے، کیوں کہ طالبان کی تیز رفتار پیش قدمی کے سلسلے میں کوئی تیاری نہیں کی گئی تھی جس سے ایک انسانی بحران نے جنم لیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں