site
stats
پاکستان

فاٹا معاملے کے پیچھے امریکی دباؤ ہے، فضل الرحمان

سوات: جمیعت علماء اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ پاک فوج نے ملک کی جغرافیائی جبکہ علماء کرام نے نظریاتی سرحدوں کی حفاظت کی ، فاٹا انضمام کے پیچھے بھی امریکی دباؤ ہے۔

سوات میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے جے یو آئی ایف کے سربراہ نے کہا کہ ہماری جماعت اس وقت قوم کی آواز بن کر ثابت ہورہی ہے اس لیے لوگ ہمارے قافلے میں شامل ہورہے ہیں، اجتماع منعقد کرنے اور شمولیت کرنے والوں کو مبارک باد دیتا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ اگر کسی ملک کو پاکستان سے تعلق اچھا رکھنا ہے تو دوستی کے لیے ہاتھ بڑھائے، اگر کسی نے قوم کو دھمکیوں سے غلام بنانے کی کوشش کی تو ایسی طاقتوں کو پاکستان میں نہیں پنپتے دیں گے۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ہمارا دشمن چور اور بزدل ہے جو ہمیشہ چور دروازے سے داخل ہونے کی کوشش میں لگا رہتا ہے مگر جمیعت علماء اسلام نے ہر بار پاکستان کے خلاف ہونے والی سازشوں کو 24 گھنٹوں میں ناکام بنایا کیونکہ ہمارے عوام اور علماء نے ملک کی نظریاتی سرحدوں کی ہمیشہ حفاظت کی اور ملک کا امن ہماری وجہ سے بھی آیا۔

جمعیت علماء اسلام کے سربراہ نے کہا کہ خیبرپختونخواہ اور ملک کے دوسرے علاقے دہشت گردی کے لپیٹ میں تھے جنہیں پرامن بنانے کے لیے پاک فوج کے جوانوں نے بہت قربانیاں دیں ساتھ ساتھ عوام نے اپنے اتحاد اور جمعیت علماء اسلام نے اپنے نظریات سے دشمن کو شکست دی۔

فضل الرحمان نے کہا کہ میں کسی وزیراعظم کا مقدمہ نہیں لڑ رہا مگر لوگ مرغی کی ایک ٹانگ پکڑ کر پاناما کی رٹ لگائے بیٹھے ہیں ، اب وقت ہے کہ ملک کو آگے بڑھنے دیا جائے کیونکہ ملک کی ترقی بہت ضروری ہے مگر لوگ سیاسی بحران پیدا کر کے پاکستان کو بحران میں ڈالنا چاہتے ہیں۔

سربراہ جے یو آئی ایف نے کہا کہ پاکستان کے عوام کو مزید آزمائش میں نہ ڈالیں کیونکہ  فاٹا کا مسئلہ اتنا سنگین نہیں جتنا اُسے بنایا جارہا ہے، کچھ لوگ مفت میں فاٹا کے چاچا اور ماما بننے کی کوشش کررہےہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ فاٹا کےعوام کو جان بوجھ کر پسماندہ رکھا گیا ہے کیونکہ فاٹا کے مسئلے کے پیچھے بھی امریکا کا دباؤ ہے  اس لیے کچھ لوگ اس مسئلے کو متنازع بنانے کی کوشش کررہے ہیں، انضمام کا فیصلہ ہمیں گھر میں بیٹھ کر اپنے اختیار سے کرنا ہوگا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top