The news is by your side.

Advertisement

امریکی سینیٹرنے پاکستان کو ایف 16 طیاروں کی فروخت پرپابندی کی قرارداد جمع کرادی

واشنگٹن: امریکہ میں پاکستان کو ایف 16 طیاروں کی فروخت کے منصوبے کی راہ میں مزید مشکلات پیدا ہوگئیں، امریکی سینیٹررینڈ پال نے پاکستان کی طیاروں کی فراہمی روکنے کے لئے قرارداد جمع کرادی ہے۔

سینیٹررینڈ پال نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹرپراپنے پیغام میں الزام تراشی کرتے ہوئے کہا ہے کہ’’ ہم (وہ) انہیں (ہمیں) اربوں ڈالردیتے ہیں اوراس کے باوجود اطلاعات ہیں کہ وہ (ہم) طالبان کی مدد کرتے ہیں۔

امریکا نے پاکستان کوآٹھ ایف سولہ طیارے فروخت کرنے کی منظوری دے دی

ایک اور ٹویٹر پیغام میں انہوں نے کہا کہ ’’ میں نے پاکستان کو ہتھیاروں کی فروخت کی روک تھام کےلئے قرارداد جمع کرادی ہے اوراگریہ منظورہوجاتی ہے تو پاکستان کو ایف 16 سمیت دیگرملٹری ہتھیاروں کی سپلائی بند کردی جائے گی‘‘۔

سب سے متنازعہ ٹویٹ میں انہوں نے پاکستانی حکومت پر الزام عائد کیا کہ ’’پاکستانی حکومت خود کو دہشت گردی کے خلاف اتحادی کہتی ہے تاہم وہ دوغلے ہیں، وہاں انسانی حقوق کی خلاف ورزی کی جاتی ہے اور غیر مسلم اقلیتوں کو قید کیا جاتا ہے‘‘۔

انہوں نے عوام سے اپیل کی ان کی قرارداد کی حمایت کی جائے کہ ’بس اب بہت ہوچکا‘ واشنگٹن اب پاکستان کی امداد کرنا بند کردے۔

پاکستان کو ایف سولہ کی فروخت پر بھارت کو تشویش نہیں ہونی چاہیئے، پینٹاگون

واضح رہے کہ امریکی حکومت نے 12 فروری کو پاکستان کو آٹھ ایف 16 طیارے، ریڈاراوردیگر عسکری سازوسامان فروخت کرنے کی منظوری دی تھی جس کی مالیت 699 ملین امریکی ڈالرہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں