The news is by your side.

Advertisement

امریکی سینیٹرکرس وین آج آزاد کشمیرکا دورہ کررہے ہیں

اسلام آباد: امریکی سینیٹرکرس وین ہولین دورہ پاکستان پرموجود ہیں وہ آج مظفرآباد آزاد کشمیرجائیں گے، کرس ہولین نے گزشتہ روز میران شاہ کا دورہ کیا جہاں انہیں سیکیورٹی صورتحال پربریفنگ دی گئی تھی۔

تفصیلات کے مطابق امریکی سینیٹر کرس ہولین کشمیر کے اصل حالات جاننے کے لیے لائن آف کنٹرول کے دونوں جانب وادی کا دورہ کرنا چاہتے تھے تاہم بھارتی حکومت نے مقبوضہ کشمیر جانے کی اجازت دینے سے انکار کردیا تھا جس کے بعد وہ پاکستان آئے ، حکومت ِ پاکستان نے انہیں آزاد کشمیر کا دورہ کرنے کے لیے انتظامات کرکے دیے۔

امریکی سینیٹر کرس ہولین کا کہنا ہے کہ کشمیر سے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی مسلسل رپورٹس مل رہی ہیں، انسانی حقوق کی خلاف ورزی کا جائزہ لینے کے لیے مقبوضہ کشمیر جانا چاہتا تھا، انہوں نے یہ بھی کہا کہ امریکی حکومت کشمیر کے معاملات کا انتہائی باریک بینی سے جائزہ لے رہی ہے۔،

امریکی سینیٹر آج اسلام آباد سے ملتان پہنچے تھے جہاں انہوں نے صوفی بزرگ بہا الدین زکریا کے مزار پر حاضری دی۔ سینیٹر کرس نے امریکی سفیر پال جونز کے ہمراہ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی سے ملاقات کی، میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا، پاکستان آکر خوشی ہوئی۔

اس موقع پر وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے امریکی سینیٹرکاملتان آمد پرشکریہ ادا کیا، کرس وین آج مظفرآباد آزاد کشمیر کا دورہ کر رہے ہیں ۔سینیٹر کرس نے عالمی امن کے لیے پاکستان کی کاوشوں کو قابل ستائش قرار دیا۔

یاد رہے کہ مقبوضہ کشمیر میں دو ماہ کےعرصے سے کرفیو جاری ہے اور وہاں اشیائے خوردو نو ش اور دواؤں کی شدید قلت پیدا ہوچکی ہے ، وادی کے اسکول بھی بند پڑے ہیں جس کے سبب طلبہ کا بھاری نقصان ہورہا ہے۔

بھارت نے دو ماہ قبل اگست کے مہینے میں مقبوضہ کشمیر کو خصوصی درجہ دینےوالے آرٹیکل 370 اے کو منسوخ کرکے اسے اپنے میں ضم کرلیا تھااور وہاں آنے والے ممکنہ ردعمل کو روکنے کے لیے کرفیو نافذ کررکھا ہے ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں