site
stats
عالمی خبریں

واشنگٹن: طالبان کی قید سے رہا امریکی فوجی کو کورٹ مارشل کاسامنا

واشنگٹن : افغانستان میں پانچ برس تک طالبان کی قید میں رہنے والے امریکی فوجی سارجنٹ برگڈال کو فوج سے منحرف ہونے کے الزام میں کورٹ مارشل کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے.

گزشتہ سال مئی میں پانچ طالبان قیدیوں کے بدلے میں سارجنٹ برگڈال کی رہائی کے بعد اب ان کو کورٹ مارشل کا سامنا ہے، امریکی فوج کے ایک بیان کے مطابق سارجنٹ برگڈال پر مشکل ڈیوٹی کی وجہ سے فوج سے منحرف ہونے اور دشمن کے سامنے غلط رویے کا مظاہرہ کر کے اپنی کمانڈ کو خطرے میں ڈالنے کے الزام کے تحت مقدمہ چلے گا.

تاہم برگڈال کے وکیل کے مطابق جو الزامات عائد کئے جارہے ہیں وہ ابتدائی سماعت میں پیش کئے گئے ثبوتوں سے مطابقت نہیں رکھتے، یوجین فیڈل وکیل برگڈال مقدمے کی ابتدائی تفتیش کے مطابق سارجنٹ برگڈال جون 2009 میں پاکستانی سرحد کے نزدیک افغان علاقے میں قائم اپنی چیک پوسٹ چھوڑ کر بھاگ گئے تھے جس کے بعد افغان طالبان نے انہیں اغواء کر لیا تھا۔

برگڈال کو طالبان سے رہا کرانے میں وائٹ ہاؤس اپنے فیصلے کا اب بھی دفاع کر رہا ہے، جوش آرنسٹ ترجمان وائٹ ہاؤس تجزیہ کاروں کے خیال میں جنرل کورٹ مارشل کی صورت میں مجرم ثابت ہونے پر سارجنٹ برگڈال کو عمر قید کی سزا ہوسکتی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top