استعمال شدہ تیل زہریلا ہوسکتا ہے -
The news is by your side.

Advertisement

استعمال شدہ تیل زہریلا ہوسکتا ہے

ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ استعمال شدہ زہریلا ہوسکتا ہے لہذاٰ اسے استعمال کرنے سے پرہیز کیا جائے۔

اسپین میں کی گئی ایک تحقیق کے مطابق ایسا تیل جسے ایک بار گرم کرکے استعمال کرلیا گیا ہو اس کو دوبارہ گرم کرنے سے یہ تیل زہر آلود ہوجاتا ہے اور انسانی جسم کو نقصان پہنچاتا ہے۔

یونیورسٹی آف باسک کنٹری کے ریسرچرز نے تحقیق کی جس کے نتیجہ سے ثابت ہوا کہ خوردنی تیل میں پکانے کے بعد اگر استعمال شدہ تیل دوبارہ استعمال کرنے کے لیے گرم کیا جائے تو اس میں زہریلے مرکبات شامل ہوسکتے ہیں اور ایسے زہریلے تیل میں اشیا پکانے سے غذائیں زہریلی ہوجاتی ہیں۔

ان زہریلی غذاؤں کے استعمال سے کئی بیماریوں کا خطرہ بڑھ جاتا ہے جن میں دماغی امراض اور مختلف قسم کے کینسر شامل ہیں۔

تحقیق کے مطابق جب تیل کو جب اچھی طرح گرم کیا جاتا ہے تو اس میں سے ایلڈے ہائیڈز خارج ہوتے ہیں جو فضا کو آلودہ کرتے ہیں اور اگر یہ سانس کے راستے پھیپھڑوں میں چلے جائیں تو صحت کے لیے خطرناک ثابت ہوسکتے ہیں جبکہ ان سے پھیپھڑوں کا کینسر بھی ہوسکتا ہے۔

یہی تیل دوبارہ گرم کیا جائے تو یہ ایلڈی ہائیڈز اور بھی خطرناک ثابت ہوتے ہیں جن سے دماغی امراض الزائمر اور پارکنسن ہوسکتے ہیں۔

ماہرین نے تجویز دی ہے کہ پکانے کے لیے استعمال شدہ تیل کے بجائے ہر بار نئے تیل کا استعمال کیا جائے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں