The news is by your side.

عزیر بلوچ ایک اور مقدمے میں بری

کراچی : انسداددہشت گردی کی عدالت نے 2 رینجرز اہلکاروں کے قتل کیس میں ملزمان عذیربلوچ کو عدم ثبوت کی بنا پر بری کردیا۔

تفصیلات کے مطابق انسداددہشت گردی کی عدالت نے 2 رینجرزاہلکاروں کے قتل کیس کا فیصلہ سنا دیا ، فیصلہ میں کہا گیا ہے کہ پراسیکیوشن ایک بارپھر عزیربلوچ ودیگر پر جرم ثابت کرنے میں ناکام رہا۔

عدالت نےملزمان عذیربلوچ اورایم کیو ایم کےشیخ شیر محمد کوبری کردیا ، ملزمان کوعدم ثبوت کی بنا پر بری کیا گیا، وکیل نے کہا کہ عذیربلوچ کے خلاف استغاثہ ٹھوس شواہد پیش نہیں کرسکا ہے۔

عدالت نے حکم دیا کہ ملزمان کسی اور مقدمے میں نامزد نہیں تو رہا کیا جائے۔

پولیس کا کہنا تھا کہ ملزموں کیخلاف پاک کالونی تھانےمیں قتل کیس کامقدمہ درج ہے، قتل کامقدمہ 2013میں درج ہوا تھا۔

واضح رہے کہ عزیر بلوچ ناقص تفتیش کے باعث اب تک گیارہ مقدمات میں بری ہوچکے ہیں ، لیاری گینگ وار کے سرغنہ پر مجموعی طور پر 61 مقدمات درج ہیں، جن میں قتل کے مقدمات بھی شامل ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں