اٹلی : ویٹی کن سٹی کے سفارت خانے سے انسانی باقیات برآمد Vatican embassy
The news is by your side.

Advertisement

اٹلی : ویٹی کن سٹی کے سفارت خانے سے انسانی باقیات برآمد

روم : اطالوی حکام نے ویٹی کن سفارت خانے سے انسانی باقیات ملنے پر کئی برس قبل گمشدہ ہونے والی دوشیزہ کا معاملہ حل ہونے کی امید ظاہر کردی۔

تفصیلات کے مطابق مسیحی برادری کے مذہبی مرکز ویٹی کن سٹی کے اٹلی کے بوگیسی میوزیم کے قریب واقع سفارت خانے سے تعمیراتی کام کے دوران مزدوروں کو انسانی باقیات ملی ہیں جسے میڈیکل ٹیسٹ کے لیے پولیس نے تحویل میں لے لیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ ویٹی کن سٹی کے سفارت خانے سے انسانی ہڈیاں ملنے پر تفتیش کاروں نے 35 برس قبل مبینہ طور پر گمشدہ ہونے والے دوشیزہ کا کیس حل ہونے کی امید ظاہر کی ہے۔

مقامی میڈیا کا کہنا ہے کہ اٹلی میں واقع سفارت خانے میں تعمیراتی کام کے دوران مزدوروں کو انسانی باقیات ملی تھی، جسے تحقیقات ٹیم نے بریک تھرو قرار دیا جارہا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ سیکیورٹی اداروں کی میڈیکل ٹیم کی جانب سے ہڈیوں کا معائنہ کیا جارہا ہے کہ مذکورہ شخص کے موت کی تاریخ، عمر اور جنس کا پتہ لگایا جاسکے۔

مقامی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ سیکیورٹی حکام کی جانب سے سفارت خانے سے برآمد ہونے والی باقیات کا ڈی این اے ٹیسٹ کےلیے کوششوں میں تیزی کردی گئی ہے۔

خیال رہے کہ سنہ 1983 میں ایمانوئیلا اورلینڈی 22 جون کو اچانک لاپتہ ہوگئی تھی جس کا آج تک کچھ پتہ نہیں چلا، اورلینڈی ویٹی کن سٹی کے ایک پولیس افسر کی بیٹی تھی۔

برطانوی خبر رساں ادارے کے مطابق اورلینڈی کے بھائی نے اپنی بہن کے لاپتہ ہونے پر ویٹی کن حکام کی جانب سے خاموشی اختیار کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ ویٹی کن سٹی کے حکام کی جانب سے 15 سالہ لڑکی کے گمشدہ ہونے کے بعد دعویٰ کیا گیا تھا کہ شاید اغواء کاروں نے دوشیزہ کو ویٹی کن حکام نے تاوان وصول کرنے کے لیے اغواء کیا ہو۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں