The news is by your side.

Advertisement

امریکی سفارت کار کا نام ای سی ایل میں ڈالنے سے متعلق فیصلہ محفوظ

اسلام آباد: امریکی سفارت کار کرنل جوزف کی گاڑی کی ٹکر سے ہلاک ہونے والے شہری عتیق بیگ کے معاملے پر سفارت کار کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں ڈالنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق امریکی سفارت کار کی گاڑی کی ٹکر سے شہری کی موت سے متعلق دائر درخواست کی سماعت اسلام آباد ہائیکورٹ میں ہوئی۔

دائر شدہ درخواست میں کرنل جوزف کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کی استدعا کی گئی تھی جس کا فیصلہ محفوظ کرلیا گیا ہے۔ ہائیکورٹ میں فیصلہ کچھ دیر میں سنائے جانے کا امکان ہے۔

درخواست کی سماعت کے دوران جسٹس عامر فاروق کا کہنا تھا کہ ای سی ایل میں نام ڈالنے سے متعلق قانونی نقطہ بتائیں جس پر وکیل نے کہا کہ کرنل جوزف سفارت کار ہیں، جنیوا کنونشن کے تحت کارروائی کی جائے۔

وکیل نے استدعا کی کہ عدالت کرنل جوزف کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا حکم دے۔ پولیس نے مقدمہ درج کر لیا لیکن تحقیقات کی سنجیدہ کوشش نہیں کی، عدالت پولیس کو شفاف تحقیقات کر کے ملزم کو گرفتار کرنے کا حکم دے۔

خیال رہے کہ مذکورہ درخواست ہلاک ہونے والے شہری عتیق بیگ کے والد محمد ادریس نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں دائر کی تھی۔

درخواست گزار نے مؤقف اختیار کیا تھا کہ کہ نشے سے مخمور کرنل جوزف نے عتیق بیگ کو ٹکر ماری۔ گاڑی کی ٹکر سے میرا بیٹا عتیق بیگ جاں بحق جبکہ اس کا کزن راحیل شدید زخمی ہوا۔

درخواست میں مزید کہا گیا کہ پولیس نے میڈیا کے دباؤ کے ڈر سے ایف آئی آر درج کی لیکن تحقیقات مکمل کرنے کی کوئی سنجیدہ کوشش نہیں کی جا رہی۔ عدالت پولیس کو شفاف تحقیقات کر کے ملزم کو گرفتار کرنے کا حکم دے۔

درخواست میں کرنل جوزف، ایس ایچ او کوہسار، آئی جی اسلام آباد اور سیکریٹری داخلہ کو فریق بنایا گیا ہے۔

خیال رہے کہ 8 اپریل کو عتیق کی ہلاکت اس وقت ہوئی جب مبینہ طور پر نشے میں امریکی فوجی اتاشی کرنل جوزف نے ٹریفک سگنل کو توڑتے ہوئے اس پر گاڑی چڑھادی۔

واقعے کے تھوڑی دیر بعد ایک اور گاڑی سفارتکار کو لینے پہنچ گئی۔ موقع پر موجود پولیس اہلکاروں نے امریکی سفارت کار کا میڈیکل کروانے کی کوشش کی تو انہوں نے یہ کہہ کر منع کردیا کہ ہم سفارت کار ہیں آپ ہمیں گرفتار نہیں کر سکتے۔

بعد ازاں دفتر خارجہ نے امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل کو طلب کر کے واضح کیا کہ اس معاملے پر پاکستان کے قانون اور ویانا کنونشن کے مطابق عمل کیا جائے گا۔ امریکی سفیر نے ملکی قوانین کی خلاف ورزی کی ہے جسے نظر انداز نہیں کیا جاسکتا۔

وفاقی حکومت نے کرنل جوزف کا نام واچ لسٹ میں ڈالنے کے بعد اس کا ڈرائیونگ لائسنس بھی منسوخ کردیا ہے، قاتل اب سفارتخانے کی پناہ میں ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں