The news is by your side.

قومی ایئرلائن کی وی آئی پی فلائٹ، سی ای او لاعلم نکلے

پارلیمنٹ کی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے قومی ایئرلائن کی جانب سے وی آئی پی فلائٹ آپریٹ کرنے کا نوٹس لے لیا۔

تفصیلات کے مطابق پارلیمنٹ کی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا چیئرمین نور عالم خان کی زیر صدارت اجلاس ہوا جس میں پی آئی اے کی وی آئی پی فلائٹ سے متعلق حکام سے استفسار کیا گیا۔

چیئرمین پی اے سی نے پوچھا کہ پی آئی اے نے کن شخصیات کیلئے وی وی آئی پی فلائیٹس آپریٹ کی؟ تو سی ای او پی آئی اے وی وی آئی پی فلائیٹس سے مستفید ہونے والی شخصیات سے لاعلم نکلے۔

چیئرمین نے کہا کہ پی آئی اے جہاز کو بطور چارٹر استعمال کیا گیا اور آپ کو شخصیات کا علم نہیں؟۔ کمیٹی نے 10سال کے دوران وی وی آئی پی چارٹر فلائٹس سے مستفید افراد کی تفصیلات طلب کر لیں۔

آڈٹ حکام نے بتایا کہ پی آئی اے میں 2016 کے دوران 350 آئی پیڈ کرائے پر لیے گئے ڈیڑھ سال کیلئے آئی پیڈ کرائے پر لینے سے قومی خزانے کو 99 ملین کا نقصان ہوا۔

نور عالم خان نے کہا کہ دنیا کے کس ملک میں آئی پیڈ کرائے پر لیے جاتے ہیں؟ تو پی آئی اے حکام نے جواب دیا آئی پیڈ کرائے پر لینے کے معاملے ایف آئی اے انکوائری کر رہا ہے اس معاملے میں 7 افراد کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے جس میں سے تین افراد گرفتار اور 3 ضمانت پر ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں