The news is by your side.

نیٹو سربراہ نے روس کے ساتھ براہ راست بڑی جنگ کا خدشہ ظاہر کر دیا

کیف: نیٹو سربراہ نے روس کے ساتھ براہ راست بڑی جنگ کا خدشہ ظاہر کر دیا ہے، اس سے قبل پیوٹن نے بھی ایٹمی جنگ کے بڑھتے خطرے سے خبردار کیا تھا۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق روس اور نیٹو کے درمیان براہ راست بڑی جنگ کا خدشہ بڑھنے لگا ہے، نیٹو کے سیکریٹری جنرل اسٹولٹن برگ کا کہنا ہے کہ یوکرین جنگ کنٹرول سے باہر ہوتی نظر آ رہی ہے۔

جمعہ کو جاری کردہ ایک انٹرویو کے مطابق، نیٹو کے سربراہ نے خدشہ ظاہر کیا کہ یوکرین میں لڑائی قابو سے باہر ہو سکتی ہے اور روس اور نیٹو کے درمیان جنگ بن سکتی ہے۔

جنرل جینز اسٹولٹن برگ نے ناروے کے نشریاتی ادارے این آر کے کو ریمارکس میں کہا کہ ’’اگر چیزیں غلط ہوتی ہیں تو وہ بھیانک حد تک غلط ہو سکتی ہیں۔‘‘

نارے کے سابق وزیر اعظم اسٹولٹن برگ نے کہا یوکرین میں جنگ کا ایک بھیانک محاذ کھل چکا ہے، اور یہ نیٹو اور روس کے درمیان ایک بڑی جنگ میں بدل سکتی ہے، اور ہم اس جنگ سے بچنے کے لیے دن رات کام کر رہے ہیں۔

یاد رہے کہ اس سے قبل روسی صدر ولادیمیر پیوٹن نے بھی خبردار کرتے ہوئے کہا تھا کہ ایٹمی جنگ کا خطرہ بڑھ رہا ہے اور اسے چھپانا غلط ہوگا۔

کریملن نے بارہا نیٹو اتحادیوں پر الزام لگایا ہے کہ وہ یوکرین کو ہتھیار فراہم کر کے، اس کے فوجیوں کو تربیت دے کر اور روسی افواج پر حملہ کرنے کے لیے ملٹری انٹیلیجنس فراہم کر کے مؤثر طریقے سے تنازع کا فریق بن رہے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں